گلوگار عنایت حسین بھٹی کیبرسی آج منائی جائے گی

گلوگار عنایت حسین بھٹی کیبرسی آج منائی جائے گی
 گلوگار عنایت حسین بھٹی کیبرسی آج منائی جائے گی

  

میکلوڈگنج(غلام حسین شاہد سے) معروف گلوگار ، ا د ا کا ر ، ہدایت کاروکالم نگار عنایت حسین بھٹی کی انیسویں برسی آج 31مئی کو منائی جائے گی۔ اس موقع پر مرحوم کے بیٹوں وسیم عباس اور ندیم عباس سمیت اُن کے کئی چاہنے والے بھی اُن کی فنی خدمات اور اُن کی روح کے ایصال ثواب کے لیے مختلف محافل کا انعقاد کریں گے۔ عنایت حسین بھٹی لاہور میں وکیل بننے آئے مگر وکیل بننے کی بجائے کامیاب اداکار و گلوکار بن گئے ۔ انہوں نے اپنی دلکش آواز اور عمدہ اداکاری کے ذریعے ملک و قوم کا نام روشن کیا ۔ آج بھی اُن کے کئی سدا بہار گیت ہمارے کانوں میں رس گھولتے ہیں ۔ مرحوم نے اپنی فنی زندگی میں متعدد نعتیں قصیدے ،قصے ،لوک داستانیں ،دوہڑے،نغمے اور کئی جنگی ترانے بھی گائے ۔

جنہیں لازوال شہرت ملی ۔ انہیں یہ اعزاز بھی حاصل ہے کہ اُ ن کا ایک گایا ہوا جنگی ترانہ اللہ اکبر ،اللہ اکبر آج بھی پاک فوج کے فوجی بینڈ میں شامل ہے۔ مرحوم نے اپنے دور کی تمام مشہوراداکاراؤں رانی ،فردوس ،سلونی ،نغمہ اورخانم سمیت سبھی کیساتھ کام کیا۔ انہوں نے کئی سبق آموز فلمیں بنائیں ۔ جن میں دھیاں نمانیاں سرفہرست ہے۔ ان کی کامیاب فلموں میں دنیا مطلب دی ، ظلم دابدلہ ،کوچوان ،سجن پیارا،چن مکھناو دیگر شامل ہیں ۔ مرحوم نے پاکستان کی پہچان ملکہ ترنم نورجہاں کے ساتھ بھی کئی لازوال گیت گائے ۔ مرحوم فلاحی کاموں میں بھی بڑھ چڑھ کر حصہ لیتے تھے۔ انہوں نے اپنی مرحومہ والدہ بختاور بی بی کے نام پر گلاب دیوی ہسپتال میں بغیر کسی چندہ مہم چلائے ایک شاندار وارڈ بھی بنوایا ۔ مرحوم جب اپنے اخبار پاکستان میں پبلک آفیسر تعینات تھے اور اخبا رمیں چیلنج کے نام سے کالم بھی لکھا کرتے تھے ۔ توراقم نے بھی صحافتی لحاظ سے ان سے بہت کچھ سیکھا اور انہوں نے بھی بھرپور رہنمائی فرمائی ۔ مرحوم نے بہت کم عرصہ میں کالم نگاری کے میدان میں بھی اپنی صلاحیتیوں کا لوہامنوایا۔ اللہ تعالیٰ ان کی مغفرت فرمائے۔

مزید : کلچر