معطلی کی درخواست پر فیصلہ محفوظ

معطلی کی درخواست پر فیصلہ محفوظ
 معطلی کی درخواست پر فیصلہ محفوظ

  

کراچی(آن لائن) سندھ ہائی کورٹ میں انسپکٹر جنرل(آئی جی)سندھ پولیس کی معطلی کے خلاف دائر کی گئی درخواست پر فریقین نے دلائل مکمل کرلیے جس کے بعد عدالت نے فیصلہ محفوظ کرتے ہوئے اللہ ڈنو خواجہ کو عہدے سے ہٹانے سے متعلق حکم امتناع میں توسیع کردی۔جسٹس منیب اختر کی سربراہی میں سندھ ہائی کورٹ کے ڈویژنل بینچ نے آئی جی سندھ اے ڈی خواجہ کو عہدے سے ہٹانے سے متعلق درخواست کی سماعت کی۔سماعت کے دوران ایڈوکیٹ جنرل سندھ ضمیر گھمرو اور درخواست گزار کے وکیل ایڈووکیٹ فیصل صدیقی عدالت میں پیش ہوئے۔درخواست گزار کے وکیل فیصل صدیقی نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ موجودہ پٹیشن پر اعتراضات کی کوئی بنیاد نہیں۔ان کا مزید کہنا تھا کہ ایڈووکیٹ جنرل کا الزام ہے کہ یہ پٹیشن اے ڈی خواجہ کے ساتھ مل کر دائر کی گئی، لیکن اس الزام کا کوئی ثبوت نہیں دیا گیا۔سماعت کے دوران عدالت میں فریقین کے دلائل سننے کے بعد عدالت عالیہ نے فیصلہ محفوظ کرتے ہوئے آئی جی سندھ کو عہدے سے ہٹانے سے متعلق حکم امتناعی میں توسیع کردی۔

آئی جی سندھ

مزید : صفحہ اول