سی این جی سیکٹر پر ٹیکس میں اضافہ واپس لیا جائے: غیاث پراچہ

سی این جی سیکٹر پر ٹیکس میں اضافہ واپس لیا جائے: غیاث پراچہ

لاہور( خبرنگار) آل پاکستان سی این جی ایسوسی ایشن کے مرکزی چئیرمین غیاث عبداللہ پراچہ نے کہا ہے کہ بجٹ میں سی این جی سیکٹر پر ٹیکس بڑھا دیا گیا ہے جس سے سی این جی مالکان کے مسائل میں اضافہ ہو گا ۔حکومت اس اضافہ پرنظرالثانی کرتے ہوئے اسے واپس لینے کا اعلان کرے۔ غیاث پراچہ نے اپنے بیان میں کہا کہ سی این جی سٹیشن مالکان کئی سال سے گیس کے بل پر چار فیصد ودہولڈنگ ٹیکس ادا کرتے رہے ہیں جسے فائیلرز کیلئے برقرار رکھا گیا ہے جبکہ نان فائیلرز کیلئے ودہولڈنگ ٹیکس کو چھ فیصد کر دیا گیا ہے۔انھوں نے کہا کہ سی این جی مالکان سے کئی سال سے گیس کی استعمال شدہ مقدار پرچار فیصد ودہولڈنگ ٹیکس اور چھبیس فیصد سیلز ٹیکس وصول کیا جاتا تھا مگر اب طریقہ کار بدل دیا گیا ہے۔ اب گیس کی استعمال شدہ مقداراور اس پر عائد ہونے والے سیلز ٹیکس کو جمع کر کے اس پر ودھولڈنگ ٹیکس وصول کیا جائے گا جو زیادتی ہے۔غیاث پراچہ نے کہا کہ سیلز ٹیکس سمیت تمام واجب الادا رقم پر ودہولڈنگ ٹیکس عائد کرنے سے یہ چار فیصد سے کافی بڑھ جائے گا جسے ہم مسترد کرتے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ گیس کے بلوں کے علاوہ بجلی کے بلوں کے طریقہ کار بھی تبدیل کر دیا گیا ہے اور اب بجلی کے استعمال پر عائد ودہولڈنگ ٹیکس کو ایڈجسٹ نہیں کیا جا سکے گا۔ انھوں نے کہا کہ حکومت ان مسائل کو جلد از جلد حل کرے تاکہ سی این جی مالکان یکسوئی سے اپنا کام کر سکیں۔

غیاث پراچہ

مزید : صفحہ آخر