عبدالحکیم،کروڑوں مالیتی سیوریج میگا پراجیکٹ بارے تحقیقات شروع کردی گئیں

عبدالحکیم،کروڑوں مالیتی سیوریج میگا پراجیکٹ بارے تحقیقات شروع کردی گئیں

عبدالحکیم(نمائندہ خصوصی) کمشنر ملتان کو ممبر پنجاب اسمبلی چوہدری فضل الرحمان نے بتایا کہ عبدالحکیم مین کروڑوں روپے کی لاگت کا سیویریج کا منصوبہ وزیر اعلی پنجاب سے منظور کرایا ،مگر پبلک ہیلتھ کے محکمہ کی نااہلی کی وجہ سے مذکورہ منصوبہ عوام کے لئے عذاب بن گیا ، زیر زمین جو پائپ ڈالے گئے وہ شیڈول کے مطابق بھی نہی اور نہ ان کا لیول کیا گیا اور پائپ زیر زمین ڈالنے سے پہلے بجری بھی نہی ڈالی گئی جبکہ متعدد پرانی سیوریج کی زیر زمین ڈالی ہوئی لائنوں کا محکمہ اور ٹھکیدار نے ملی بگھت کر کے نئی لائن(بقیہ نمبر39صفحہ12پر )

شو کر کے بھاری بل وصول کر لئے ، جس پر کمشنر ملتان نے ڈی سی خانیوال ممبر پنجاب اسمبلی چوہدری فضل الرحمان او ر ایکس ای این پبلک ہلیتھ پر مشتمل کمیٹی تشکیل دی جو سیوریج کے میگا پراجیکیٹ کے بارے مکمل انکوائری کر کے مفصل رپورت کمشنر ملتان کو ارسال کریگی ،اس سلسلے مین ڈی خانیوال مظفر محمود سیال ممبر پنجاب اسمبلی چوہدری فضل الرحمان اور ایکس ای این پبلک ہیلتھ نے عبدالحکیم کا دورہ کیاجہا ن ڈی سی خانیوال نے چئیرمین میونسپل کمیٹی عبدالحکیم شیخ عبدالطیف کو زمے داری سونپی کہ وہ ٹیکنیکل ٹیم کے ہمراہ سیوریج کے میگا پراجیکیٹ کے بارے مفصل انکوائری کریں کہ شیڈول کے مطابق کام ہوا ہے یا نہی اور کہاں کہا ں کرپشن ہوئی ہے اس کی نشان دہی کریں جو پرانی لائنوں کو نئی بنا کر بل وصول کیا گیا اس بارے بھی بلاخوف وخطر رپورٹ تیار کریں ،زیر زمین پائپ ڈالنے سے قبل جو سڑکات بنی ہوئی تھیں اور اور ان کو توڑا گیا ہے اور پھر بنایا نہی گیا اس کی بھی رپورٹ ارسال کریں جبکہ ڈی سی پبلک ہیلتھ کے ایک ای این کو ہدایت کہ وہ توڑی گئی سڑکات اور سولنگ کی فوری مرمت کریں ، رانا شوق محمد کونسلر نے اس موقع پر بتایا کہ ان کے وارد میں جہاں زیر زمین پائپ ڈالے گئے ہیں وہان بستی بہاول پور مین سات آٹھ لاکھ روپے سے بننے والی سڑک کا نام ونشان مٹ گیا ہے جبکہ محکمہ پبلک ہیلتھ نے کئی ماہ گزرنے کے بعد بھی اس کو تاحال نہی بنایا ،اسی طرح کچاکھوہ روڈ کی کمپکیشن بھی شیڈول کے مطابق نہی کی گئی جہاں زیر زمین پائپ ڈالے گئے ہیں، اس موقع پر کونسلر محمود الحسن کھوکھر ، محمد اقبال سہو ، ملک غلام شبیر اقبال سہو، اور دیگر لوگ بھی موجود تھے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر