طلبی کے باوجود حسن نواز پاناما کیس جے آئی ٹی کے روبرو پیش نہ ہوسکے

طلبی کے باوجود حسن نواز پاناما کیس جے آئی ٹی کے روبرو پیش نہ ہوسکے
طلبی کے باوجود حسن نواز پاناما کیس جے آئی ٹی کے روبرو پیش نہ ہوسکے

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن) وزیراعظم نوازشریف کے صاحبزادے حسن نواز پاناما کیس کی تحقیقات کرنیوالی جوائنٹ انوسٹی گیشن ٹیم (جے آئی ٹی ) کی طلبی کے باوجودپیش نہیں ہوسکے جبکہ جے آئی ٹی نے حسن نواز کے بعد وزیراعظم نوازشریف کو نوٹس دینے کا فیصلہ کرلیا ہے اور اس ضمن میں سوالنامہ بھی تیار کرلیا۔

مقامی میڈیا کے مطابق وزیراعظم نوازشریف کے دوسرے صاحبزادے حسن نواز گزشتہ رات پاکستان پہنچے اور وزیراعظم ہاﺅس سے جوڈیشل اکیڈمی میں جوائنٹ انوسٹی گیشن ٹیم کے روبرو پیش ہونے کے لیے نکلے لیکن پیش نہیں ہوئے ۔ ذرائع کے مطابق حسن نواز نے قانونی پیچیدگیوں کی وجہ سے اپنا بیان ریکارڈ نہیں کرایا اور کمیٹی سے دوروز کی مہلت لے لی گئی ہے اور قوی امکان ہے کہ وہ تین جون کو پیش ہوں گے ۔

جیونیوز کے مطابق جے آئی ٹی نے حسن نواز کو طلب کیا تھا تاہم شریف فیملی کا موقف ہے کہ جے آئی ٹی نے اُنہیں طلب نہیں کیا لیکن وہ پیش ہوں گے ۔ دوسری طرف نیونیوز کے مطابق حسن نواز کے بعد وزیراعظم کو نوٹس بھیجنے کا فیصلہ کرلیا گیا ہے اور اس ضمن میں ایک سوالنامہ بھی تیار کرلیاگیا جبکہ حسین نوازشریف کی طرف سے جے آئی ٹی کے رکن بلال رسول اور عامر عزیز پر اعتراض کیا گیا لیکن سپریم کورٹ سے درخواست مسترد ہونے بعد دونوں ممبران کے سیکیورٹی سٹاف میں اضافہ کردیاگیا۔

یادرہے کہ اس سے قبل پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وزیرمملکت برائے اطلاعات مریم اورنگزیب نے قوم کو یقین دہانی کرائی تھی کہ جے آئی ٹی نے شریف خاندان کے جس فرد کو بھی طلب کیا ، وہ جے آئی ٹی کے روبروپیش ہوگا۔

مزید : اسلام آباد

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...