چینی کمیشن رپورٹ شاہد خاقان،شہباز شریف کیخلاف چارج شیٹ:شہزاد اکبر،سکینڈل کے ذمہ دار عمران خان،عثمان بزدار،اسد عمر،رپورٹ میں حقائق نہیں بتائے گئے:سابق وزیر اعظم

  چینی کمیشن رپورٹ شاہد خاقان،شہباز شریف کیخلاف چارج شیٹ:شہزاد اکبر،سکینڈل ...

  

لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں) وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے احتساب شہزاد اکبر کا کہنا ہے کہ پاکستان مسلم لیگ(ن) کے صدر اور اپوزیشن لیڈر شہباز شریف اور سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کیخلاف چینی بحران کمیشن کی رپورٹ چارج شیٹ ہے۔لاہور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے معاون خصوصی برائے احتساب کا کہنا تھا سابق وزیراعظم شاہد خان عباسی نے چینی کی پیداوار کا صحیح تعین کیے بغیر 24 گھنٹے کے نوٹس کے اوپر چینی پر 20 ارب روپے کی سبسڈی شوگر ملز کو دی تاکہ وہ برآمد کرسکیں۔شہزاد اکبر نے کمیشن رپورٹ کے پیرا 209 کا حوالہ دے کر کہا کہ شاہد خاقان عباسی سبسڈی کے حق میں کوئی جواب دے سکے اور نہ ہی کوئی دستاویز پیش کیں۔ شاہد خاقان عباسی اپنے مالک شہباز شریف کے اتنے وفادار ہیں کہ ان کے بھتیجے سلیمان یا حمزہ شہباز کے کہنے پر 20 ارب روپے کی سبسڈی دیدی۔پریس کانفرنس کے دوران انہوں نے طنزیہ کہا کہ یہ ہوتا ہے لائق شخص، یہ ہوتا ہے وفادار شخص۔شہزاد اکبر نے کہا سندھ والوں نے بھی حصہ ڈالا لیکن میں ابھی اس پر محدود رکھتا ہوں۔ وزیر اعظم عمران خان نے ای سی سی (اقتصادی رابطہ کمیٹی) کی منظوری کے بعد چینی کو برآمد کرنے کی اجازت دی تھی نا کہ سبسڈی کی۔انہوں نے کمیشن رپورٹ کا پیرا پڑھ کر سنایا کہ یہ درست ہے کہ ملک کو زرمبادلہ کی ضرورت تھی اور وافر مقدار میں شوگر موجود تھی جسے برآمد کیا جاسکتا تھا۔شہزاد اکبر نے کہا کہ کمیشن نے چینی بحران کی اصل وجہ مارکیٹ اور شوگر ملز کے گٹھ جوڑ کو قرار دیا۔ کمیشن نے تحریری طور پر دو مرتبہ سندھ کے وزیراعلیٰ کو طلب کیا لیکن وہ پیش نہیں، ای سی سی کے رکن اسد عمر نے بھی پیش ہو کر تمام سوالات کے جواب دیئے۔ انہوں نے مسلم لیگ (ن) کے صدر اور سابق وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف پر بھی کڑی تنقید کی اور کہا کہ کمیشن کی رپورٹ میں شہباز شریف کے کارناموں کا تفصیل سے تذکرہ موجود ہے۔جب شہباز شریف وزیراعلیٰ پنجاب تھے، ان کی نگرانی میں العریبیہ شوگر ملز نے کسانوں کو تقریباً سوا ارب روپے کی کم ادائیگی کی تھی۔انہوں نے چینی بحران کمیشن کی رپورٹ کے پیرا 422 صفحہ 119 کا حوالے دیتے ہوئے کہا کہ سابق وزیراعلیٰ پنجاب نے کسانوں کو سپورٹ پرائز کی شفاف ادائیگی کیلئے سپیشل برانچ کو رپورٹ جمع کرانے کا کہا اور بعدازاں اس رپورٹ میں انکشاف کیا کہ شہباز شریف خاندان کی العریبیہ شوگر ملز نے کسانوں کا حق مارا۔انکا کہنا تھا شہباز شریف کا پورا خاندان العریبیہ شوگر ملز کا شیئر ہولڈرز ہے، کسان اور صارف بد حال ہے لیکن شوگر ملز خوش ہیں۔انہوں نے شہباز شریف کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ اس سے بڑا کیا ثبوت چاہیے۔ العربییہ شوگر ملز میں دو لیجر بکس تھیں جس پر ’این اور آر‘ درج تھا۔ جس لیجر بک پر این درج تھا اس کا مطلب تھا کہ گنا خریدا گیا اور چینی بھی بنائی گئی لیکن اسے ظاہر نہیں کیا۔شہزاد اکبر نے کہا شہباز شریف کیخلاف ریفرنس دائر ہونیوالا ہے جس کے خوف سے انہوں نے خود کو قرنطینہ کرلیا۔ لیگی صدر کیلئے بھاگنے کے تمام راستے بند ہیں، شاید وہ لندن بھی نہ جا سکیں۔

شہزاد اکبر

راولپنڈی (مانیٹرنگ ڈیسک) مسلم لیگ(ن) کے رہنماء وسابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ چینی کی قیمت میں اضافہ کے ذمہ دار عمران خان، عثمان بزدار، اسد عمر ہیں، ایکسپورٹ سے پہلی چینی کی قیمت 55 روپے 47 پیسے فی کلو تھی۔شاہد خاقان عباسی نے نیوز کانفرنس کرتے ہوئے کہا چینی کمیشن نے 347 صفحات کی رپورٹ شائع کی، حقائق نہیں بتائے گئے، چینی کمیشن نے رپورٹ میں ذمہ داروں کا تعین نہیں کیا، کمیشن کی رپورٹ حقائق چھپانے کیلئے پبلک ہوتی ہے، کمیشن کی رپورٹ میں یہ نہیں پتہ چلے گا کہ قیمت کیوں بڑھی، ملک میں چینی کی قیمت 60 فیصد بڑھ گئی، جب سے کمیشن بنا ہے چینی کی قیمت میں 20 فیصد اضافہ ہوا ہے۔شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا چینی برآمد کرنے کا فیصلہ وفاقی کابینہ کا تھا، شوگر مافیا کابینہ اور پی ٹی آئی کے اندر موجود ہے، کمیشن کی رپورٹ میں اصل حقائق کو چھپایا گیا، 20 ماہ تک چینی کی قیمتوں میں اضافہ ہوتا رہا لیکن حکومت نے مانیٹر نہیں کیا، وفاقی کابینہ کی سربراہی وزیرا عظم کرتے ہیں، ذمہ دار عمران خان ہیں، چینی کی برآمد مسلم لیگ(ن) کے دور میں بھی ہوئی تاہم قیمتیں کنٹرول رکھی گئیں۔

شاہد خاقان

مزید :

صفحہ اول -