ریاست جرمنی سوٹا میں جلاؤ گھیراؤ،کار سوار کی مظاہرین پر فائرنگ،نوجواجن ہلاک

ریاست جرمنی سوٹا میں جلاؤ گھیراؤ،کار سوار کی مظاہرین پر فائرنگ،نوجواجن ہلاک

  

واشنگٹن (اظہر زمان) امریکی ریاست منی سوٹا میں ایک سیاہ فام قیدی جارج فلائیڈ کی پولیس کے ہاتھوں ہلاکت پر احتجاج ملک کی دوسری ریاستوں میں بھی پھیل گیا ہے جبکہ مشی گن ریاست کے شہر ڈیٹریاٹ میں ایک نامعلوم کار سوار نے مظاہرین پر اچانک فائرنگ کر دی جس سے ایک انیس سالہ نوجوان ہلاک ہو گیا۔فسادات پھیلنے کے باعث امریکی ریاست جارجیا میں مظاہرین نے اس سانحہ پر احتجاج کے طور پر سڑکوں پر کھڑی گاڑیوں کو آگ لگا دی جس کے بعد گورنر نے ہنگامی حالت کا اعلان کر دیا۔ صدر ٹرمپ نے ان ہنگاموں کو قابو کرنے کیلئے نیشنل گارڈز کو حکم دیا ہے کہ وہ جہاں جہاں ضرورت ہو ریاستی حکومتوں کی مدد کیلئے فوری طور پر پہنچ جائیں۔ ہلاک ہونے والے قیدی کا خاندان اور مظاہرین چار پولیس افسروں کے خلاف قتل کا مقدمہ درج کرنے کا مطالبہ کر رہے ہیں ریاست منی سوٹا میں پہلے ہی پندرہ سو نیشنل گارڈ امن و امان قائم کرنے میں مدد کر رہے ہیں واشنگٹن ڈی سی کی اطلاع کے مطابق وہاں بھی ایک ہجوم وائٹ ہاؤس کے باہر اکٹھا ہو گیا جس نے صدر ٹرمپ کے خلاف نعرے بازی کی۔ مشتعل مظاہرین نے وائٹ ہاؤس کے باہر سیکرٹ سروس کی قائم کردہ رکاوٹوں کو توڑ کر آگے بڑھنے کی کوشش کی۔ اس دوران مظاہرین نے سرکاری فورس پر خالی بوتلیں اور دیگر اشیاء پھنیکیں جس کے جواب میں فورس نے مظاہرین پر مرچوں کا سپرے کیا۔ امریکی ریاست ورجینیا کے صدر مقام رچمنڈ میں بھی مظاہرین نے پولیس کی ایک گاڑی کو آگ لگ دی امریکی ریاست پورٹ لینڈ کے صدر مقام اوریگن میں مظاہرین نے ایک پولیس سٹیشن پر دھاوا بول دیا اور اندر پہنچ کر آگ لگا دی فوری طور پر کسی جانی نقصان ہونے کی اطلاع نہیں ملی اس کے علاوہ کیلی فورنیا اور ٹیکساس کی ریاستوں میں بھی مظاہرے ہونے کی خبریں موصول ہوئی ہیں امریکہ کے تمام شہروں میں مظاہرین عمومی طور پر سیاہ فام ہیں اور ان کے احتجاج کا نشانہ پولیس حکام ہیں۔

سیاہ فام ہلاکت

مزید :

صفحہ اول -