جنگی صبح 1بجے ہوتی ہے وہ پی آئی اے چیئرمین کے پیچھے پڑے ہیں:فیصل واوڈا

جنگی صبح 1بجے ہوتی ہے وہ پی آئی اے چیئرمین کے پیچھے پڑے ہیں:فیصل واوڈا

  

کراچی (اسٹاف رپورٹر) وفاقی وزیر برائے آبی وسائل فیصل واوڈا نے کہاہے کہ جنکی صبح دوپہرایک بجے ہوتی ہے وہ پی آئی اے چیئرمین کے پیچھے پڑے ہیں، طیارہ حادثہ کی تحقیقات میں کوتاہی یا انسانی غلطی برداشت نہیں کی جائے گی،سندھ کی تقدیر بدلنے کے لئے اٹھارویں ترمیم میں ترمیم کرنی ہو گی،گورنر راج کے نفاذ کے لئے کوئی تجویززیرغورنہیں ہے،کراچی میں 69 غیرقانونی ہائیڈرنٹ ہیں جہاں سے پانی فروخت کیا جارہا ہے،اگر میں چاہوں تو انہیں گرا سکتا ہوں۔ وہ کراچی میں اپنے حلقہ انتخاب میں راشن کی تقسیم کے سلسلہ میں پریس کانفرنس سے خطاب کررہے تھے۔ وفاقی وزیربرائے آبی وسائل نے کہاکہ اپنے حلقے میں سب سے بڑی راشن کمپئین میں لوگوں تک راش پہنچا رہے ہیں،جس میں عوام کی عزت نفس کا خیال کیا جارہا ہے۔ہم سندھ حکومت کی طرح راشن نہیں دے رہے،انسانوں کی خدمت کے لیے کام کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا جنہوں نے ہماری کمیٹی کو ریجکٹ کیا ہم ان کی سیاست کو ریجکٹ کرتے ہیں،انہیں سات ارب روپے کی گندم اور ایکسپائرمال کا حساب دینا ہوگا۔ان کا کہنا تھا کہ پی ائی اے کی تحقیقات میں ایک مہینہ کا وقت دیا گیا ہے،تحقیقات میں کوتاہی یا انسانی غلطی برداشت نہیں کی جائے گی،جنہوں نے راتوں رات اٹھ ارب روپے ہیلتھ پر خرچ کئے،طیارہ حادثہ کومتنازعہ بنارہے ہیں سندھ حکومت کی نااہلی ہے کہ جہاز حادثے کے لواحقین اپنے پیاروں کی لاش کے لیے پریشان ہیں،سائیں سرکار اب تماشا بند کرے اور لواحقین کی مدد کرے۔ انہوں نے کہاکہ جنکی صبح دوپہر ایک بجے ہوتی ہے وہ پی آئی اے چئیرمین کے پیچھے پڑے ہیں،طیارے سانحہ کی تفتیشی ٹیم کو وہاں سے ملنے والا تمام تر سامان دیا جا چکا ہے رپورٹ آتے ہی عوام میں پبلک کریں گے۔انہوں نے بتایا کہ بھا شا ڈیم کی تعمیرات کا کام جاری ہے کراچی میں پانی کی فراہمی کے لیے سندھ بیراج بنایا جا رہا ہے جس کے لئے 35 کروڑ روپے منظور ہو چکے ہیں اور اسٹڈی جاری ہے۔انہوں نے کہاکہ کرپشن میں ملوث اپنا ہو یا پرایا کسی کو نہیں چھوڑیں گے،ہم احتساب کے معاملے پر کسی کا گریبان نہیں چھوڑیں گے چاہے ہمیں وزارت یا صدارت کسی کی بھی قربانی دینا پڑے۔ انہوں نے کہاکہ یہ ہماریملک کا المیہ ہے یہاں احتساب ہوتا نہیں ہے،باہر بھیج دیا جاتاہے،مریم نواز خاموش ہیں،انکا ٹوئیٹر خاموش ہے۔وفاقی وزیرکا کہنا تھا کہ کراچی میں پانی کے 69 غیرقانونی ہائیڈرنٹ ہیں جہاں سے پانی فروخت کیا جارہا ہے،جیسے مافیا کے خلاف پہلے ایکشن لیا ہے اب بھی دو گھنٹے نہیں لگاں گا ایکشن لینے میں،عوام کو پانی نہیں ملا تو شہر میں قائم ہائیڈرنٹس توڑدیں گے۔انہوں نے کہاکہ سندھ کی تقدیر بدلنے کے لئے اٹھارویں ترمیم میں ترمیم کرنی ہو گی گورنر راج کے نفاذ کے لئے کوئی تجویززیرغورنہیں ہے،اٹھارھویں ترامیم سے کوئی مسائل نہیں لیکن صوبے کی بہتری کے لئے ہر قدم اٹھائیں گے،حکومت سندھ کو ایک روپیہ بھی نہیں دیا جائے گا یہ لوگ بغیر کپڑوں کے تھے جو کمپنی کے مالک بن گئے،سندھ حکومت نے 855 کروڑ کا راشن رات کی تاریکی میں تقسیم کردیا،پیپلزپارٹی نے کمیٹی کو مسترد کیا ہے ہم انکی تمام ڈیمانڈ کو مسترد کرتے ہیں۔

مزید :

صفحہ آخر -