پاکستان میں کورونا وائرس کے اب تک کے تمام ریکارڈ ٹوٹ گئے، ایک دن میں کیسز اور ہلاکتوں میں اب تک کا سب سے بڑا اضافہ

پاکستان میں کورونا وائرس کے اب تک کے تمام ریکارڈ ٹوٹ گئے، ایک دن میں کیسز اور ...
پاکستان میں کورونا وائرس کے اب تک کے تمام ریکارڈ ٹوٹ گئے، ایک دن میں کیسز اور ہلاکتوں میں اب تک کا سب سے بڑا اضافہ

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)  پاکستا ن   میں کورونا وائرس کے مریضوں کی تعداد اور ہلاکتوں کی تعداد میں ایک دن میں  اب تک کا سب بڑا اضافہ ہوا ہے ، گزشتہ چوبیس گھنٹوں کے دوران 88 افراد جاں بحق اور 3039 نئے کیسز رپورٹ ہوئے ہیں۔

تفصیلات 

سرکاری اعدادوشمار کے مطابق ملک بھر میں گزشتہ 24 گھنٹے کے دوران کورونا وائرس کے 3039 مزید کیسز رپورٹ ہوئے جس کے بعد ملک بھر میں کورونا کے مجموعی مصدقہ مریضوں کی تعداد 69,496 ہوگئی ، اسی طرح ایک ہی دن میں سب سے 88 ہلاکتیں ہوئی جو خود ایک ریکارڈ ہے ، تازہ ہلاکتوں کے بعد مجموعی تعداد 1,483 ہوگئی ۔ گزشتہ چوبیس گھنٹوں میں 1811 مریض صحت یاب ہو کر گھروں کو روانہ ہوگئے جبکہ 42,742 ایکٹو کیسز ہیں۔ 

صوبوں کی حالت 

صوبوں کے حساب سے مریضوں کا جائزہ لیں تو سندھ سب سے آگئے ہیں جہاں 27،360 مریض ہیں ، اس کے بعد پنجاب 25056، خیبرپختونخوا میں 9540 ، بلوچستان میں 4193، اسلام آباد میں 2418، گلگت بلتستان 678 اور آزاد کشمیر میں  251 کیسز رپورٹ ہوچکے ہیں ۔

اموات 

سرکاری اعداد و شمار کے مطابق گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران کورونا وائرس کے باعث 88 سے زائد افراد جاں بحق ہوئے ہیں جو کہ ایک ریکارڈ ہے۔ ملک میں اب تک کورونا وبا سے ایک ہزار 483 اموات ہو چکی ہیں۔سب سے زیادہ اموات پنجاب میں ہوئیں جہاں 475 مریض جان کی بازی ہار گئے، سندھ میں 465 ، خیبرپختونخوا میں 453 ، بلوچستان 46، اسلام آباد 27، گلگت بلستان میں 11 اور آزاد کشمیر میں 6 افراد جان کی بازی ہار گئے۔

ٹیسٹ

 گزشتہ 24 گھنٹے کے دوران ملک بھر میں14,972 کورونا ٹیسٹ کیے گئے  جس کے بعد ٹیسٹوں کی مجموعی تعداد 547,030  ہوگئی۔ 

ادھر پنجاب کی  وزیر صحت پنجاب ڈاکٹر یاسمین راشد نے کہا ہے کہ کورونا مریضوں کی معلومات فراہمی کیلئے ویب سائٹ بنا دی، ایپ میں ہر ہسپتال میں دستیاب طبی سہولتوں کی تفصیل موجود ہوگی، صوبے میں وائرس سے متاثر افراد کی تعداد مسلسل بڑھ رہی ہے، ہسپتالوں میں جگہ نہیں رہی۔

صوبائی وزیر صحت پنجاب ڈاکٹر یاسمین راشد نےپریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ حکومت نے کورونا مریضوں کی معلومات فراہمی کیلئے ویب سائٹ بنا دی ہے، ایپ میں ہر ہسپتال میں دستیاب طبی سہولت سے متعلق تفصیل موجود ہے، کورونا ٹیسٹ مثبت آنیوالے ریسکیو 1122 سے رابطہ کرسکتے ہیں، کورونا کے مریض کو بیڈ کیلئے انتظار نہیں کرنا پڑے گا، کورونا کی روک تھام کیلئے مکمل اقدامات کیے جا رہے ہیں، وزیراعلیٰ پنجاب کی ہدایت پر لاہور کیلئے الگ کنٹرول روم بنایا ہے، ہمیں کورونا کے ساتھ ہی زندہ رہنا ہے۔

ڈاکٹر یاسمین راشد کا کہنا تھا لوگوں میں شعور پیدا کرنے کیلئے حفاظتی تدابیر بتائی جائیں گی، امریکا جیسے ملک میں بھی لوگ روٹی کھانے کیلئے لائنوں میں کھڑے ہیں، اللہ کا شکر ہے کہ ہمارے ہاں غریب آدمی کو روٹی مل رہی ہے، دنیا بھر میں کورونا علاج کیلئے دوا تیار کرنیکی کوشش ہو رہی ہے، دنیا بھر میں کورونا وائرس کا کوئی ایکسپرٹ نہیں ہے۔وزیر صحت پنجاب نے مزید کہا تمام حقائق میڈیا کے ساتھ شیئر کریں گے، میڈیا کو آگاہ رکھنے کیلئے ویب سائٹ بنائی ہے، پنجاب کے ہسپتالوں میں 27 ہزار بیڈز ہیں، صوبے میں وائرس سے متاثر افراد کی تعداد مسلسل بڑھ رہی ہے، ہسپتالوں میں جگہ نہیں رہی، کورونا مریضوں کی معلومات فراہمی کیلئے ویب سائٹ بنائی گئی، صوبے میں کورونا کے 64 مریض وینٹی لیٹر پر ہیں۔

دوسری طرف پنجاب نے لاک ڈاون میں مزید نرمی کا فیصلہ کر لیا، ایس او پیز کے مطابق مختلف اداروں کو کھولنے کے لئے وفاق کو سفارشات پیش کرنے پر اتفاق کرلیا گیا، وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کی زیر صدات کابینہ کمیٹی برائے انسداد کورونا کے اجلاس میں کورونا وائرس کی وجہ سے پیدا ہونے والی صورتحال کا تفصیلی جائزہ لیا گیا۔

دنیا نیوز کے مطابق وزیراعلیٰ سردار عثمان بزدار کی زیر صدارت اجلاس میں شرکاء نے کورونا وائرس سے بچاؤ کی تدابیر کے لئے تجاویز اور سفارشات پیش کیں، ایس او پیز کے مطابق مختلف اداروں کو کھولنے کے لئے وفاق کو سفارشات پیش کرنے پر اتفاق کیساتھ صوبہ بھر میں منہ اورناک ڈھانپنے کی پابندی پر عملدرآمد یقینی بنانے کا اصولی فیصلہ کیا گیا۔

  

حکومتی سفارشات کے تحت انتظامیہ، پولیس اور ٹریفک وارڈن منہ اورناک نہ ڈھانپنے والے افراد کو تنبیہ کر سکیں گے۔اجلاس میں ایک ہزارلیڈی ڈاکٹرز کے انٹرویوزکی اجازت دے دی گئی ہے جس کے بعد پبلک سروس کمیشن ایس او پیزپر عملدرآمد کو یقینی بنا کر تحریری امتحان اور انٹرویوز لے سکے گا جبکہ این سی او سی کو نئی بھرتیوں کی اجازت کے فیصلے سے آگاہ کیاجائے گا۔

مقامی طو رپر وینٹی لیٹر اور ریسپارائٹر کی تیاری کی اجازت کے لئے ڈریپ سے رجوع کیاجائے گا۔ صوبے میں پارکس کھولنے، تجارتی اداروں کے نئے اوقات کار اور 2 دن تعطیل کا فیصلہ بھی این سی او سی سے مشروط کردیا گیا ہے ۔اجلاس میں وزیر اعلی عثمان بزدار نے کہا کہ وفاق سے 1500 وینٹی لیٹر فراہم کرنے کی درخواست کی جائے گی- ریسٹورنٹس،کیفے وغیرہ کھولنے سے متعلق وفاق کی ہدایات پر عمل کیاجائے گا-

مزید :

اہم خبریں -کورونا وائرس -