مجلسِ پاکستان کی جانب سے نظریہ پاکستان اور نصابِ تعلیم کے عنوان سے کانفرنس، اشتیاق گوندل کا خطاب

مجلسِ پاکستان کی جانب سے نظریہ پاکستان اور نصابِ تعلیم کے عنوان سے کانفرنس، ...
مجلسِ پاکستان کی جانب سے نظریہ پاکستان اور نصابِ تعلیم کے عنوان سے کانفرنس، اشتیاق گوندل کا خطاب

  

ریاض (وقار نسیم وامق) سعودی عرب میں مجلسِ پاکستان کی جانب سے نظریہ پاکستان اور نصابِ تعلیم کے عنوان سے آن لائن کانفرنس منعقد ہوئی جس میں شرکاء سے معروف دانشور اشتیاق گوندل نے اظہار خیال کیا اور کہا کہ پاکستان اسلام کے نام پر وجود میں آیا اور دین اسلام ہی اسکی بقاء کی ضمانت بھی ہے.

سعودی دارالحکومت ریاض میں مجلسِ پاکستان کی جانب سے منعقدہ آن لائن کانفرنس سے سیاسی، سماجی، ادبی اور مذہبی جماعتوں کے ارکان سے اظہارِ خیال کرتے ہوئے معروف دانشور اشتیاق گوندل نے کہا کہ پاکستان کا مقصد دین اسلام کی سربلندی کے لئے تھا اور نظریہ پاکستان کا مطلب ملک میں قرآن و سنت کا نظام قائم کرنا ہے مگر بدقسمتی سے ایسا نہیں ہے دین اسلام میں ملک کو چلانے کی تمام تر پالیسی قرآن وسنت میں واضح کی گئی ہیں اور ہمارا دین اقلیتوں کو حقوق دینے کا درس دیتا ہے آج کا پاکستان نظریہ پاکستان کے مطابق نہیں ہے ہماری نوجوان نسل کو جان بوجھ کر نصاب تعلیم کو تبدیل کرکے نظریہ پاکستان سے دور رکھا جا رہا ہے مگر وقت کی اہم ضرورت ہے کہ نوجوان طبقے کو ملکی اساس اور اسکے قیام کے مقصد سے روشناس کروایا جائے جس کے لئے میڈیا بہتر طور پر کردار ادا کر سکتا ہے.

آن لائن کانفرنس سے مجلسِ پاکستان کے صدر رانا عبدالرؤف، سیکرٹری جنرل حافظ عبدالوحید، رانا عمر فاروق سمیت دیگر نے بھی اظہارِ خیال کیا اور کہا کہ اسلام ہمیں مکمل ضابطہ حیات دیتا ہے اس لئے ضروری ہے کہ اسکے مطابق ملک کو بھی چلایا جائے تاکہ مسائل کو اسلامی اصولوں کے مطابق حل کیا. جاسکے.

مزید :

عرب دنیا -تارکین پاکستان -