اینگرو ایگزمپ پرائیویٹ کے زیراہتمام پاکستان کی سب سے بڑی رائس پراسیسنگ مل نے کام شروع کردیا

اینگرو ایگزمپ پرائیویٹ کے زیراہتمام پاکستان کی سب سے بڑی رائس پراسیسنگ مل نے ...

  

لاہور(کامرس رپورٹر)انیگرو کارپوریشن لمیٹڈ کے ذیلی ادارے اینگرو ایگزمپ پرائیویٹ لمیٹڈ کے زیر اہتمام مریدکے کے قریب پاکستان کی سب سے بڑی رائس پراسیسنگ ملز نے باقاعدہ کام شروع کر دیا ہے اور جلد ہی ہسک سے چلنے والا 4میگاواٹ کا پاور پلانٹ بھی کام شروع کر دے گا ۔اس سال اینگرو کا مونجی خریدنے کا ہدف ایک لاکھ 75ہزار ٹن رکھا گیا ہے تاکہ زیادہ سے زیادہ باسمتی چاول بیرون ملک ایکسپورٹ کر کے زرمبادلہ کمایا جا سکے۔ان خیالات کا اظہار اینگرو ایگزمپ ایگری پراڈاکٹ کے مینجر سیڈ بزنس اینڈ آر اینڈ ڈی عابد الیاس ڈار نے زرعی رپورٹرز کو فیکٹری کے دورے کے موقع پر بریفنگ دیتے ہوئے کیا۔انہوں نے بتایا کہ رائس ملز 65ایکڑ پر مشتمل ہے جس پر 4ارب روپے کی لاگت آئی ہے ۔

جبکہ مقامی افراد کو روزگار بھی فراہم کیا گیا ہے۔انہوں نے بتایا کہ گزشتہ کچھ عرصے سے پاکستان کی باسمتی چاول کی ایکسپورٹ میں کمی آ رہی ہے اور 2012ءمیں چاول کی ایکسپورٹ 7لاکھ ٹن پر آ گئی ہے جبکہ بھارت کی چاول کی ایکسپورٹ بڑھ رہی ہے جس کی بنیادی وجہ بھارت کی باسمتی کی مختلف نئی اقسام ہیں جبکہ پاکستان کے پاس سپر باسمتی کے علاوہ کوئی نئی ورائٹی نہیں لیکن اینگرو نے اب باسمتی کی نئی ورائٹی 515متعارف کرائی ہے جس کی فی ایکڑ پیداوار 50من سے زائد ہے ۔مقامی کاشتکاروں کو اس نئی ورائٹی کاشت کرنے کی تربیت دی جا رہی ہے ۔ماڈل رائس فارمز بنائے جا رہے ہیں جہاں کسانوں کو اعلی قسم کا بیج فراہم کرنے کے ساتھ انہیں مفت مشورے اور ان کی تربیت بھی کی جا رہی ہے ۔انیگرو 30سے35فیصد مونجی کسانوں سے براہ راست خریدتا ہے اور انہیں ادائیگی دو سے تین دن میں کر دی جاتی ہے ۔انہوں نے کہا کہ رائس ملز میں مونجی سپلائی کرنے اور یہاں کام کرنے والے ملازمین کو مکمل حفاظتی لباس اور ضروری سامان فراہم کیا جاتا ہے ۔اینگرو فاﺅنڈیشن کے تحت لیبر اور ان کے اہل خانہ کو صحت اور تعلیم سمیت تمام بنیادی سہولیات فراہم کی جاتی ہیں ۔

مزید :

کامرس -