بار کے انتخابات میں ہارنے کے بعد کیچڑ نہیں اچھالنا چاہئے ،عاصمہ جہانگیر

بار کے انتخابات میں ہارنے کے بعد کیچڑ نہیں اچھالنا چاہئے ،عاصمہ جہانگیر

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)سپریم کورٹ بار ایسوسی ایشن کی سابقہ صدر عاصمہ جہانگیر نے کہا ہے کہ بار اور بنچ کا تعلق بہت گہرا ہے کیونکہ انصاف کی فراہمی میں بنچ اور بارجو کردار ادا کر سکتا ہے وہ عام آدمی نہیں کر سکتا ۔وہ گزشتہ روز لاہور ہائی کورٹ کے احاطہ میں سپریم کورٹ بار کے انتخابات میں بطور صدر حصہ لینے والے امیدوار کامران مرتضیٰ کے ساتھ میڈیا سے بات چیت کر رہی تھیں ۔ انہوں نے کہا کہ سپریم کورٹ بار کے انتخابات بہت اہمیت کے حامل ہیں ، وکلاءقانون کی بالا دستی کے اپنا کردار ادا کرتے رہیں ہیں اور کرتے رہیں گے لیکن ایک بات جو نہایت افسوس کے ساتھ کہنی پڑتی ہے کہ بار کے انتخابات میں ہارنے کے بعد کیچڑ نہیں اچھالنا چاہئے یہ جمہوری رویہ نہیں،انہوں نے مزید کہا افراسیاب خان کے حوالے سے کہا کہ وہ نہایت دیانتدار آدمی ہیں لیکن یہ ہماری بد قسمتی ہے کہ اچھے لوگو ں کو معاشرے میں ڈس کریڈٹ کیا جاتا ہے ، ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ ہم قانون کی بالہ دستی پر یقین رکھتے ہیں کسی فرد یا شخص کے ساتھ نہیں ہم اداروں کی بات کرتے ہیں ۔ سپریم کورٹ بار ایسوسی ایشن کے سابق صدر علی احمد کرد نے صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ وکلا ءکی جدوجہد کے ذریعے ملک میں تبدیلییاں رونما ہوئیں وکلاءملک کے استحکام کے لیے اپنا بھر پور کردار ادا کرتے رہیں ہیں اور کرتے رہیں گے ۔ بعدازاں انڈیپینڈنٹ کے مخالف امیدوارپروفیشنل گروپ کے امیدوار امان اللہ کنرانی کے حمایت یافتہ حامد خان نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ سپریم کورٹ بار کےانتخابات کی موجودہ صورت حال یکسر مختلف اور بہتر ہے ، انہوں نے کہا کہ ماضی کے ادوار میں حکومتوں کی بار کو سپورٹ رہی ہے چاروں حکومتیں ان کے لیے اپنا کردار ادا کرتی رہیں ہیں وکلاءکو پلاٹوں کے لالچ دیئے جاتے رہے ہیں لیکن آج وکلا یہ جان گئے ہیں کہ حقیقت کیا ہے اور حق کی لڑائی کون لڑ رہا ہے ۔ سیاسی جماعت پاکستان تحریک انصاف کا بار کی سیاست میں دلچسپی کے حوالے سے پوچھے گئے ایک سوال پر ان کا کہنا تھا کہ ہمارے امیدوار کا تعلق پاکستان تحریک انصاف سے نہیں ، کیونکہ سیاسی جماعتوں کا تعلق بار کی سیاست سے نہیں ہوتا ہماری ایک ہی پارٹی ہے اور وہ وکلاءپارٹی ہے اور یہ فرق ہم نے ہمیشہ برقرار رکھا ہے ، انہوں نے کہا کہ آئین اور قانون کی بالہ دستی کے لیے ہی کردار ادا کرنا ہوگا ۔ صدارت کے امیدوار امان اللہ کنرانی نے کہا کہ یہ پہلی موقع ہے کہ بار کے الیکشن بار کی سطح پر ہو رہے ہیں جس میں بیرونی مداخلت نہیں ہو گی ، انہوں نے کہا انصاف صرف بظاہری طور پر نہ ہو بلکہ ہوتا ہوا نظر آئے اس بات کی گواہی عوام دیں کہ انصاف ہو رہا ہے ۔

مزید :

صفحہ آخر -