بھارت کاکنٹرول لائن پر ڈی جی ایم اوز کی سطح پر بات چیت سے انکار

بھارت کاکنٹرول لائن پر ڈی جی ایم اوز کی سطح پر بات چیت سے انکار

  

نئی دہلی(اے این این) بھارت نیویارک میں ہونے والی وزراءاعظم ملاقات کے فیصلوں سے مکر گیا،کنٹرول لائن کی صورتحال پر دی جی ایم اوز کی میٹنگ سے انکار،بات چیت سے قبل مکمل سیز فائر کا مطالبہ۔گزشتہ روز نئی دہلی میں ایک تقریب میں شرکت کے موقع پر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے بھاری وزیر خارجہ سلمان خورشید نے کنٹرول لائن پر امن قائم کرنے کے لئے ڈائریکٹر جنرل ملٹری آپریشنز کے درمیان میٹنگ منعقد کرنے کی تجویز کومسترد کرتے ہوئے کہاکہ پاکستان کی طرف سے سیز فائر بندی کی خلاف ورزیاں جاری ہیں اور جب تک ایسی خلاف ورزیاں بند نہیں کی جاتی ہیں تب تک کسی بھی سطح پر بات چیت ناممکن ہے۔انھوں نے کہاکہ دونوں ملکوں کو امن کے لئے کام کرناچاہئے۔ ہندوستان اس بات کے حق میں ہمیشہ سے ہی رہا ہے کہ ایل او سی پر امن کی صورتحال قائم رہے اورپاکستان کوبھی اس بارے میں ذمہ داری ادا کرنی چاہئے۔بھارت سرحدوں پر امن کی صورتحال برقرار رکھنے کے حق میں ہے اور پاکستان کی حکومت کو بھی چاہئے کہ وہ امن کو فروغ دینے کے لئے کام کرے۔ ہم چاہتے ہیں کہ سرحدوں پر سیز فائر معاہدے پر موثر طور پر عمل ہو لیکن جس طرح کی صورتحال گزشتہ کئی ہفتوں سے چلی آ رہی ہے اس سے تنا¶ اور کشیدگی کی صورتحال پیدا ہوگئی ہے۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان ہی سیزفائر بندی کی خلاف ورزیوں میں ملوث رہا ہے اور اس کی فوج ایل او سی و سرحد پر فائر بندی کے معاہدے کو سبوتاژ کررہی ہے۔ انہوں نے کہاکہ پاکستانی فوج کی طرف سے سیز فائر کی بار بار کی خلاف ورزیوں سے بھارت کو تشویش اور افسوس ہو رہا ہے کیونکہ ہندوستان کی فوج سیز فائر کے معاہدے پر مکمل طور پر عملدرآمد کررہی ہے۔ انہوں نے اس بات پر ناراضگی کا اظہار کیا کہ با بار کی اپیلوں کو پاکستان نظرانداز کررہا ہے جس سے امن قائم کرنے کی کوششوں کو ہی نقصان ہو رہا ہے۔ انہوں نے واضح کیا کہ فی الحال دونوں ملکوں کے ڈی جی ایم اوز کے درمیان کوئی میٹنگ نہیں ہوگی۔ انکار

مزید :

صفحہ اول -