نیشنل پولیس فاﺅنڈیشن اور انجم عقیل کے درمیان معاہدہ کالعدم قرار،سپریم کورٹ نے غیرقانونی پلاٹوں کی الاٹمنٹ منسوخ کردی

نیشنل پولیس فاﺅنڈیشن اور انجم عقیل کے درمیان معاہدہ کالعدم قرار،سپریم کورٹ ...

لیگی رہنماءکو ادائیگی کا حکم ، این پی ایف اورانجم عقیل کے درمیان معاہدہ کرپشن پر مبنی تھا: عدالت عظمیٰ

نیشنل پولیس فاﺅنڈیشن اور انجم عقیل کے درمیان معاہدہ کالعدم قرار،سپریم کورٹ نے غیرقانونی پلاٹوں کی الاٹمنٹ منسوخ کردی

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) سپریم کورٹ نے نیشنل پولیس فاﺅنڈیشن اراضی کیس کافیصلہ سنادیاہے جس کے مطابق عدالت عظمیٰ نے فاﺅنڈیشن کے تمام غیرقانونی پلاٹوں کی الاٹمنٹ منسوخ اور انجم عقیل کیساتھ معاہدہ کالعدم قراردیدیا، مسلم لیگ ن کے سابق رکن قومی اسمبلی انجم عقیل کو 126کنال اور 88ڈویلپڈ پلاٹوں کی قیمت اداکرنے کا حکم بھی دیاگیاہے ۔ عدالت نے نیب کو ملزمان کے خلاف کارروائی کا حکم دیتے ہوئے کہاکہ عدم ادائیگی کی صورت میں انجم عقیل کی منقولہ اور غیرمنقولہ جائیداد ضبط کی جائے ۔ سپریم کورٹ نے نیشنل پولیس فاﺅنڈیشن اراضی کیس میں کے فیصلے میں کہاکہ نیشنل پولیس فاﺅنڈیشن اور انجم عقیل کا معاہدہ کرپشن پر مبنی تھا۔نجی ٹی وی چینل کے مطابق عدالت نے حکم دیا ہے کہ انجم عقیل 126 کنال اراضی اور88 پلاٹوں کی قیمت ادا کریں،قیمت ادا نہ کرنے پر انجم عقیل کی منقولہ اور غیرمنقولہ جائیداد ضبط کرنے کا بھی حکم دیاگیاہے اور اس ضمن میں دو ماہ کی مہلت دی گئی ہے۔سپریم کورٹ نے انجم عقیل کیخلاف فوجداری کارروائی بھی کرنے کا حکم دیا ہے اور واضح کیاہے کہ نیشنل پولیس فاﺅنڈیشن اور انجم عقیل کی ملی بھگت سے سب کچھ ہواہے ، انجم عقیل اور دیگرملزمان کے خلاف کارروائی کے لیے عدالت عظمیٰ نے معاملہ نیب کے سپرد کردیاہے ۔فاضل عدالت نے آڈیٹرجنرل سے رپورٹ بھی طلب کرلی ہے ۔واضح رہے کہ انجم عقیل مسلم لیگ (ن)کے سابق ایم این اے رہے ہیں۔

مزید :

رئیل سٹیٹ -اہم خبریں -