’’کشمیر سے متعلق پاکستان کی سیاسی و فوج قیادت کی سوچ تبدیل‘‘

’’کشمیر سے متعلق پاکستان کی سیاسی و فوج قیادت کی سوچ تبدیل‘‘

مقبوضہ علاقے میں پھر سے جہاد شروع ہو سکتاہے: برطانوی میڈیا

’’کشمیر سے متعلق پاکستان کی سیاسی و فوج قیادت کی سوچ تبدیل‘‘

  

لندن ، لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک )برطانوی میڈیا نے آئندہ سال افغانستان سے امریکی اور نیٹو  افواج کے انخلاءکے بعدمقبوضہ کشمیر میں جہاد پھر سے شروع ہونے کی پیشن گوہی کی ہے اور خدشہ ظاہر کیاہے کہ انخلاءکے بعد  پنجابی طالبان کی توجہ ایک بار پھر کشمیر کی طرف ہو جائے گی ۔بر طانوی میڈیا کے مطابق ماضی میں ایسا دیکھا گیا ہے کہ جہادی گروپوں نے اپنے ٹھکانے تبدیل کیے ہیں اور افغانستان سے غیر ملکی افواج نکلنے کے بعد پنجابی طالبان کے نام سے مشہور عسکریت پسند اپنی توجہ مقبوضہ کشمیر کی جانب کر سکتے ہیں۔رپورٹ کے مطابق پاکستان اور بھارت کے درمیان اشتعال دائمی مسئلہ ہے جبکہ دوسری را ئے یہ ہے کہ کشمیر کے بارے میں دونوں ممالک کی فوجی اور سویلین قیادت کی سوچ میں فر ق ہے ،کشمیر کے حوالے سے پاکستانی فوج کی سوچ میں تبدیلی نظر آ رہی ہے ۔برطانوی میڈیا کے حوالے سے مقامی اخبار نے لکھاکہ پاکستان کی نو منتخب حکومت نے بھی بھارت کے ساتھ دو طرفہ تعلقات بہتر کرنے کا اعلان کیا ہے ۔پاکستان کے سابق سفیر عارف کمال کے مطابق پاکستان کی سویلین اور فوجی قیادت کی کشمیر کے حوالے سے سوچ ابھری ہے جو کشمیر کے حوالے سے پرانی پالیسی کے مختلف ہے ۔

مزید :

قومی -