فوجی افسروں اور چرچ حملے کے باعث مذاکرات میں تاخیر ہوئی: چوہدری نثار

فوجی افسروں اور چرچ حملے کے باعث مذاکرات میں تاخیر ہوئی: چوہدری نثار
فوجی افسروں اور چرچ حملے کے باعث مذاکرات میں تاخیر ہوئی: چوہدری نثار

  

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار نے کہا ہے کہ میجر جنرل ثناءاللہ کی شہادت اور چرچ پر حملہ طالبان سے مذاکرات میں تاخیر کا سبب بنے، اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ کا کہنا ہے کہ طالبان سے مذاکرات کا عمل شروع ہو چکا ہے۔ ذرائع کے مطابق پارلیمانی رہنماو¿ں کے اجلاس میں وزیر داخلہ نے طالبان سے مذاکرات کے حوالے سے بریفننگ دی جس پر پارلیمانی رہنماو¿ں نے وزیر داخلہ سے استفسار کیا کہ مذاکرات میں تاخیر کیوں ہوئی تو وزیر داخلہ کا کہنا تھا کہ میجر جنرل ثناءاللہ کی شہادت اور چرچ پر حملہ طالبان سے مذاکرات میں تاخیر کا سبب بنے، سامنے لاشیں پڑی تھیں ، مذاکرات کس منہ سے کرتے۔ انہوں نے بتایا کہ طالبان کے 37 گروپ ہیں، مجموعی طور پر شدت پسندوں کے 50 سے زائد گروپ ہیں جن میں سے بیشتر دھڑے حکیم اللہ محسود کی قیادت تسلیم کرتے ہیں۔ اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ کا کہنا تھا کہ طالبان سے مذاکرات کا عمل شروع ہو چکا ہے، یہ اجلاس اے پی سی کا فالو اپ تھا، حکومت نے سب کو اعتماد میں لیا۔

مزید :

اسلام آباد -اہم خبریں -