یہودی شرپسندوں نے فلسطینی شہری کا زیتون کا باغ اجاڑدیا

یہودی شرپسندوں نے فلسطینی شہری کا زیتون کا باغ اجاڑدیا

بیت لحم(اے این این)فلسطین کے مقبوضہ مغربی کنارے کے شہربیت لحم میں نحالین کے مقام پر یہودی شرپسندوں نے گذشتہ روزایک مقامی فلسطینی شہر کا زیتون کے ایک باغ پرحملہ کر کے دسیوں پھل دار پودے جڑوں سے اکھاڑ پھینکے۔نحالین کے مقامی کسانوں نے کہا ہے کہ یہودی آباد کاروں نے احمد محمد فنون نامی شہری کے باغ میں موجود کم سے کم 20 سے زائد پھل دار پودے اکھاڑ پھینکے۔باغ کے مالک کے بیٹے زکریا فنون نے کہا ہے کہ ہمارے باغ پر صہیونی آباد کاروں نے اس وقت حملہ کیا جب وہاں پر نگرانی کیلئے کوئی موجود نہیں تھا۔

انہوں نے کہا کہ بیتل لحم شہر کے آس پاس اسرائیل کی کئی کالونیاں اور فوجی کیمپ قائم ہیں۔ یہ یہودی کالونیاں آہستہ آہستہ وسعت اختیار کرتی جا رہی ہیں۔ یہودی آباد کار ان کالونیوں کے قریب واقع فلسطینیوں کی اراضی کو ہتھیانے کیلئے حملے کرتے رہتے ہیں۔

مزید : عالمی منظر