بریسٹ کینسرکے موضوع پر پنک ربن کی تین روزہ آگاہی مہم ختم

بریسٹ کینسرکے موضوع پر پنک ربن کی تین روزہ آگاہی مہم ختم

لاہور(لیڈی رپورٹر) پاکستان میں بریسٹ کینسر سے بچاؤ کے لئے پنک ربن کی 3روزہ آگاہی مہم اختتام۔ پنک ربن اورپی ٹی سی ایل کے اشتراک سے امپوریم مال لاہور میں صارفین کے لیے اس موذی مرض کے بارے میں آگاہی مہم کا آغا ز 27اکتوبرکو ہوا۔اس مہم کے سلسلے میں مال میں آگاہی سٹال لگایا گیا ۔ بریسٹ کینسر جیسے مہلک مرض سے متعلق آگاہی مہم کا مقصد پاکستان میں پہلی بار کینسر اسپتال کا قیام ہے۔ اس مہم میں 50ہزار سے زائد افراد نے شرکت کی۔ خاص طور پر خواتین نے اس جان لیوا بیماری کے بارے میں جاننے میں گہری دلچسپی کا اظہار کیا ہے۔ پنک ربن کی ٹیم نے مہم میں شرکت کرنے والے افراد کو کتابچے بھی فراہم کئے تاکہ وہ اس بیماری کی تشخیص اور علامات کے بارے میں آگاہ ہوسکیں۔ اس موقع پر پنک ربن کے چیف ایگزیکٹو عمر آفتاب نے کہا کہ ہم طویل عرصے سے بریسٹ کینسر کے حوالے سے شعور اجاگر کرنے کے لئے آگاہی مہم کا انعقاد کررہے ہیں۔ ہمیں خوشی ہے کہ ہماری سخت محنت کی وجہ سے لوگ پہلے کی نسبت آسانی سے اس بیماری کے بارے میں بات کرتے ہیں۔ امپوریم مال میں آپ کو معاشرے کے ہر طبقے سے تعلق رکھنے والے افراد ملیں گے۔ خاص طور پر رواں سال لوگوں نے اس میں زیادہ دلچسپی لی۔ انہوں نے کہا کہ پنک ربن نے پاکستان میں پانچ اہم بریسٹ کینسر اسپتالوں کے قیام کے لئے تجاویز پیش کی ہیں۔ یہ صرف تجویز ہی نہیں بلکہ ہم نے مخیر افراد کے تعاون سے لاہور میں پہلے اسپتال کی تعمیر شروع کردی ہے۔ پنک ربن مزید مخیر حضرات کے تعاون کی ضرورت ہے عمر آفتاب نے مزید کہا کہ پاکستان میں بریسٹ کینسر سے اموات کی شرح 43.7فیصد ہے۔ ایک اندازے کے مطابق تقریبا40 ہزار خواتین موت کا شکار ہوجاتی ہیں اور ہر سال 90ہزار خواتین میں اس بیماری کی تشخیص ہوتی ہے۔ ’’پنکٹوبر‘‘ پنک ربن کی اس بیماری کے حوالے سے آگاہی مہم کی کوششوں کا حصہ ہے تاکہ اس بیماری سے متاثرہ خواتین کی شرح اموات میں کمی لائی جاسکے۔

بریسٹ کینسر

مزید : میٹروپولیٹن 1