لاہور لیڈز یونیورسٹی کا کانووکیشن، 800گرایجوئٹس میں ڈگریاں تقسیم

لاہور لیڈز یونیورسٹی کا کانووکیشن، 800گرایجوئٹس میں ڈگریاں تقسیم

لاہور (پ ر) لیڈز یونیورسٹی کے پہلے کانووکیشن کی تقریب بروز پیر 30 اکتوبر7 201کو ایوان اقبال کمپلکس لاہور میں منعقد ہوئی۔ جن میں فارغ التحصیل ہونے والے 800 طلبا وطالبات کو انجیئرنگ، مینجمنٹ سائنسز،کمپیوٹرسائنسز،ریاضی،ابلاغیات،اردو،ایجوکیشن، انگریزی، اور اسلامیات کے شعبہ جات میں ڈگریاں تقسیم کی گئیں۔تقریب کے مہمان خصوصی صوبائی وزیر قانون و پارلیمانی افیئرز رانا ثناء اللہ خاں تھے۔ جنہوں نے مختلف شعبہ جات میں نمایاں کارکردگی دکھانے والے طلبا و طالبات میں میڈلز، ایوارڈذ اور تعریفی سرٹیفکیٹ تقسیم کئے۔بی ایس سی سول انجیئرنگ کے طالبعلم محمد تابین البراکات کو رول آف آنرز اور میڈلز سے نوازا گیا۔ جبکہ مختلف شعبہ جات کے 9 طالبعلموں کو اعلیٰ کارکردگی سرٹیفکیٹ اور 26 طلبا و طالبات کو امتیازی کارکردگی سرٹیفکیٹ دیئے گئے۔ ۔ تقریب کا باقائدہ آغاز قران پاک کی تلاوت سے کیا گیا۔

تقریب کی صدارت پرو وائس چانسلر ڈاکٹر عبدالمجید چیمہ نے کی۔ صدر یونیورسٹی میاں ظہور احمد وٹو ،چیئرمین لیڈز ٹرسٹ میاں عبدالغفور وٹو اور ممبر قومی اسمبلی میاں معین وٹو نے خصوصی شرکت کی۔ مہمان خصوصی رانا ثناء اللہ نے اپنے خطاب میں ملک کی ترقی کیلئے اعلیٰ تعلیم اور تحقیق کی اہمیت پر زور دیا۔انھوں نے مزید کہا کہ پنجاب کی لیڈز شپ تعلیم کو اولین ترجیح دیتی ہے ۔ اس مدد میں ہر سال ذہین بچوں کو ملک اور بیرون ملک سٹڈی کیلئے کثیر تعداد میں وطائف دیئے جاتے ہیں۔

پرو وائس چانسلر ڈاکٹر عبدالمجید چیمہ نے لیڈز یونیورسٹی کی رپورٹ پیش کرتے کہا کہ یونیورسٹی نے اپنے قیام کے قلیل عرصے 6سال میں نصابی و غیر نصابی شعبوں میں غیر معمولی کامیابیاں حاصل کی ہیں۔ ریسرچ اور کوالٹی ایجوکیشن کی وجہ سے لیڈز یونیورسٹی نے یہ مقام حاصل کیا ہے۔ مختلف شعبہ جات میں 60 سے زائد پی ایچ ڈی ڈاکٹرز اور 100 سے زائد ایم فل فیکلٹی ممبران جدید ،اعلیٰ اور مارکیٹ کی ضروریات کے مطابق علم کی ترویج میں مصروف عمل ہیں۔6 فیکلٹیز کے تحت 22 شعبہ جات کام کر رہے ہیں۔جن میں بی اے،بی ایس سی آنرز کے 20 ڈگری پروگرامز،ایم ایس سی ، ایم اے 14اور ایم ایس ایم فل کے 24ڈگری پروگرامز میں جدید نصاب پڑھایا جا رہا ہے۔تحقیق کے میدان میں بین الاقوامی طرز کی ریسرچ کے فروغ کیلئے ORIC اور CASR کے نام سے فعال شعبہ جات کام کر رہے ہیں۔امریکہ، تھائی لینڈ،ملائشیا اور ترکی کی ٹاپ کلاس یونیورسٹیز سے فیکلٹی ڈویلپمینٹ اور ریسرچ کے میدان میں باہمی تعاون کے معاہدہ جات کئے ہوئے ہیں۔انھوں نے گرایجوئٹس اور انکے والدین کو مبارک باد بھی پیش کی ۔

تقریب کے آخر میں صدر یونیورسٹی میاں ظہور وٹو نے چیف گیسٹ صوبائی وزیر قانون و پارلیمانی آفیرز رانا ثناء اللہ خاں اور معزز مہمانان گرامی کا شکریہ ادا کرتے کہا کہ یونیورسٹی کے قیام کے وقت ہم نے طے کیا تھا کہ آج کے طالبعلم کل کے قومی لیڈز ہونگے۔ ہم نے کوالٹی

ایجوکیشن کے ساتھ شخصیت سازی پر خاص توجہ دی ہے تاکہ ڈگری حاصل کر کے طالبعلم ملکی ترقی میں حصہ ڈالنے کے ساتھ معاشرے کا مفید شہری بھی بن سکیں۔ ہم اس سال بھی ہزاروں ذہین اور ضرورت مند طلبا و طالبات کو لاکھوں روپے کے سکالرشپ دے رہے ہیں تاکہ غربت کی وجہ سے کوئی تعلیم سے محروم نہ ہو جائے۔انھوں نے سٹوڈنٹس کو نصیحت بھی کی کہ سیکھنے کا عمل ساری زندگی جاری رکھنا چایئے۔

ایڈوائزر یونیورسٹی ڈاکٹر اشہد احمد، مینجنگ ڈائریکٹر اسد وٹو، رجسٹرار نورالامین ہوتیانہ، ڈائریکٹر سٹوڈنٹ آفیر سید تنویر عباس تابش، چیف فنانس آفیسر فیض الباری، ڈینز و صدور شعبہ جات ڈاکٹر اقبال نکیانہ، ڈاکٹر نسیم ریاض بٹ، ڈاکٹر عبدالروف بٹ، ڈاکٹر مجاہد منصوری، ایڈوکیٹ محمد یونس، ڈاکٹر محمود احمد اظہر، ڈاکٹر طارق عزیز اور کثیر تعداد میں فیکلٹی ممبران اور گرایجوئٹس طالبعلموں کے والدین اور رشتہ داروں نے شرکت کی۔

مزید : میٹروپولیٹن 4