صدارتی انتخابات میں روسی مداخلت کا معاملہ ، ٹرمپ کا انتخابی ٹیم چیئر مین ساتھی سمیت گرفتار

صدارتی انتخابات میں روسی مداخلت کا معاملہ ، ٹرمپ کا انتخابی ٹیم چیئر مین ...

واشنگٹن (اظہر زمان، خصوصی رپورٹ) گزشتہ صدارتی انتخابات میں ٹرمپ ٹیم کے سابق چیئرمین مینا فورٹ اور ایک ساتھی رچرڈ گیٹس کیخلا ف فرد جرم عائد ہونے کے بعد انہیں گرفتار کرلیا گیا ہے، جس سے وائٹ ہاؤس میں کھلبلی مچ گئی ہے، ایف بی آئی کے سپیشل پراسیکیوٹر رابر ٹ میولر نے پیر کے روز ٹیم چیئرمین پال مینا فورٹ اور ان کے کاروباری ساتھی کیخلاف فیڈرل گرینڈ جیوری کی طرف سے بارہ نکاتی فرد جرم عائد ہونے کا ڈرامائی اعلان کیا۔ جس کے تھوڑی دیر بعد دونوں ملزموں نے اپنے آپ کو ایف بی آئی کے حوالے کردیا۔ گرینڈ جیوری نے فیصلہ 27 اکتوبر کو سنایا تھا جس کے بارے میں میڈیا میں اطلاعات افشاء ہورہی تھیں لیکن ایف بی آئی کی طرف سے صدارتی انتخابات میں ٹرمپ ٹیم سے روسی ملی بھگت کی تفتیش پر مامور خصوصی نمائندے رابرٹ میولر اس سلسلے میں خاموش تھے جنہوں نے گزشتہ روز اس کی تصدیق کردی، ان کے اعلان کے فوراً بعد توقع کے مطابق ترجمان وائٹ ہاؤس سارہ سینڈرس نے ہنگامی پریس بریفنگ میں واضح کیا کہ اس فرد جرم کا صدر ٹرمپ سے کوئی تعلق نہیں ، میڈیا رپورٹ کے مطابق 12نکاتی فرد جرم میں ان کی آف شور کمپنیوں کے ذریعے یو کرائن کے ایک سیاستدان کو مالی ادائیگیوں کا معاملہ بھی شامل ہے جس کی روسی صدر پیوٹن کیساتھ بہت دوستی تھی، ترجمان وائٹ ہاؤس کا کہنا تھا صدرٹرمپ سپیشل پراسیکیوٹر کو بر طرف کرنے کا کوئی ارادہ نہیں رکھتے، رابرٹ میولر نے اپنے عہدے کا چارج سنبھالنے کے بعد جب غیر جانبدارانہ تفتیش کرنے کا اعلان کیا تھا تو ایسی خبریں آرہی تھیں کہ شاید صدر ٹرمپ انہیں برطرف کردیں، اس کیساتھ ہی قانونی ماہرین یہ بھی بتاتے ر ہے ہیں کہ صدر کو انہیں براہ راست برطرف کرنے کا اختیار نہیں اور اگر وہ چاہیں تو اس کام کیلئے چیئرمین ایف بی آئی کو درخواست کرسکتے ہیں لیکن یہ چیئرمین پہلے ہی آزادانہ طریقے سے کام کررہے ہیں۔مبصرین کے مطابق فرد جرم عائد ہونے کے بعد روسی ملی بھگت کی تفتیش وائٹ ہاؤس کیلئے ایک نئے خطرناک مرحلے میں داخل ہوگئی ہے۔ ایف بی آئی ذرائع نے بتایا ہے دونوں ملزموں نے اپنے آپ کو تفتیشی حکام کے حوالے کرنے کے بعد صحت جرم سے انکار کیا ہے۔معلوم ہوا ہے دونوں ملزموں کو گرفتاری کے بعد ایک وفاقی جج کے سامنے پیش کیا گیا جہاں ان کیخلاف مقدمے کا آغاز ہوگیا ہے اور جرم ثابت ہونے پر انہیں اسی سال تک قید اور لاکھوں ڈالر جرمانہ ہوسکتا ہے۔ استغاثہ کے مطابق مینا فورٹ اور رچرڈ گیٹس نے یو کرائن کی حکومت کے علاووہ روس کی حامی ایک سیاسی جماعت ’’پارٹی آف ریجنز‘‘ کے غیر رجسٹرڈ ایجنٹس کی حیثیت سے کام کررہے تھے جس کے سربراہ وکٹر یانو کووچ تھے، اس سیاستدان کے روسی صدر پیوٹن سے گہرے ذاتی تعلقات تھے، ان ملزموں نے آف شور کمپنیوں کے ذریعے ساڑھے سات کروڑ ڈالر کی رقم خفیہ طور پر یو کرائن بھیجی۔ مینا فورٹ پر الزام ہے کہ اس نے

ایک کروڑ اسی لاکھ ڈالر سے زائد رقم کی منی لانڈرنگ کرکے امریکہ میں جائیداد خریدی، فرد جرم کے مطابق دونوں ملزموں نے06ء سے17ء کے درمیان عرصے میں امریکی ریاست کیخلاف سازش کی اور منی لانڈرنگ کے مرتکب ہوئے۔

ٹرمپ چیئرمین گرفتار

مزید : علاقائی