نواز شریف جمہوریت کیخلاف سازشوں میں شریک رہے : بلاول بھٹو زرداری

نواز شریف جمہوریت کیخلاف سازشوں میں شریک رہے : بلاول بھٹو زرداری
 نواز شریف جمہوریت کیخلاف سازشوں میں شریک رہے : بلاول بھٹو زرداری

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک ، نیوز ایجنسیاں) چیئرمین پاکستان پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری کا کہنا ہے جوئی نیشنل یا ٹیکنو کر یٹ سیٹ اپ برداشت نہیں کرینگے ، پیپلزپارٹی کیلئے کوئی بھی غیر جمہوری راستہ، ٹیکنوکریٹ یا نیشنل حکومت ناقابل قبول ہے، پیپلزپارٹی جمہوریت کیساتھ کھڑی ہے،ہم نے جمہوریت کیلئے قربانیاں دیں اور جمہوری نظام کو ہی فوقیت دیں گے، جمہوریت کیخلاف سازشوں میں نواز شریف شر یک رہے، کبھی نفرت کی سیاست نہیں کی، عمران خان خطرناک کھیل کھیل رہے ہیں اور تعصب کو ہوا دے رہے ہیں، عمران خان واحد سیا ستد ان ہیں جنہوں نے بینظیر کی شہادت پر تعزیت تک نہیں کی،گزشتہ روزڈان نیوز کے پروگرام ’بول بول پاکستان‘ میں پہلی مرتبہ بات کرتے ہوئے انکا مزید کہنا تھا مجھے نہیں لگتا ملک میں اس طرح کا کوئی سیٹ اپ آنیوالا ہے، مسلم لیگ (ن) اس حوالے سے عوام کو گمراہ اور اس پر بے جا زو ر دینے سمیت لوگوں کو اکسانے کی کوشش کر رہی ہے۔انہوں نے الزام لگایا سابق وزیر اعظم نواز شریف نے اپنے دور حکومت میں کچھ متنا ز ع اقدامات اٹھائے جن سے جمہوری اساس کو نقصان پہنچا،ہم متنازع اقدامات کی حمایت نہیں کرتے، پیپلز پارٹی ہمیشہ عوام کی جما عت ر ہی ہے، ہمارا بنیادی اصول ہی یہی ہے عوام طاقت کا سرچشمہ ہیں، مسئلہ یہ ہے کہ عوام یا تو جمہوریت یا کرپشن کیساتھ ہیں اور ذوالفقار علی بھٹو کا نواسہ اور بینظیر بھٹو کا بیٹا ہونے کے ناطے جمہوریت کیساتھ کھڑے ہیں،عوام پیپلز پارٹی کو ووٹ دینگے ،بلاول نے نوجوانوں کا ووٹ پی ٹی آئی کو ملنے کے تاثر کی تردید کرتے ہوئے کہا پیپلز پارٹی نے انتخابات میں تحریک انصاف سے زیادہ نوجوانوں کے ووٹ حاصل کیے۔پی ٹی آئی کرپشن کیخلاف نعر وں کو اپنے سیاسی فائدہ کیلئے استعمال کر رہی ہے، حالانکہ ذوالفقارعلی بھٹو پہلے سیاسی رہنما تھے جنہوں نے کرپشن کیخلا ف مہم چلائی۔بد قسمتی سے دنیا بھر کے سیاستدان نفرت کی سیاست کرکے ایک خطرناک گیم کھیل رہے ہیں، لیکن میں اس طرح کی سیا ست نہیں کرنا چاہتا ۔پیپلز پارٹی کے رہنماؤں پر کرپشن کے الزامات سے متعلق بلاول بھٹو زرداری نے خبردار کیا صرف چند لوگوں کا احتسا ب قابل قبول نہیں ۔قانون سب کیلئے برابر ہونا چاہئے، احتساب سب کا ہو اوربلا تفریق ہو ، مخصوص نہیں پیپلز پارٹی کا کوئی شخص کرپشن میں ملوث ہوا تو ساتھ نہیں دیں گے،تاہم یہ بھی درست نہیں کہ بعض کہانیوں پر کسی کو 90دن کیلئے بند کر دیا جائے اور پھر تحقیقات ہوں تو کچھ بھی نہ ملے،انہوں نے الزام لگایا کہ ہمارے پارٹی رہنماؤں کو ایک طریقہ کار کے مطابق اٹھایا جارہا ہے جس کے سیاسی مقاصد ہیں جبکہ ا نہیں بغیر کسی ٹھوس ثبوت کے حراست میں لیا گیا۔ پیپلزپارٹی نے 2013ء کے بعد بھی کئی ضمنی انتخابات میں کامیابی حاصل کی، عام انتخا با ت میں پارٹی کی کارکردگی بہتر ہوگی، ذوالفقار علی بھٹو اور بینظیر بھٹو نے اپنی جانیں قربان کیں، پیپلزپارٹی دہشتگردی کیخلاف زیرو ٹالرنس پالیسی ر کھتی ہے، ہم دہشتگردی کیخلاف ہیں،عمران خان کی مقبولیت کا تاثر غلط ہے کرپشن پر سب سے زیادہ بولنے والے کرپشن پر سیاست کرتے ہیں، اس مسئلے کا حل نہیں نکالنا چاہتے ہیں، کرپشن کے خاتمے کیلئے اقدامات کرنے ہوں گے، پیپلزپارٹی نے کبھی نفرت کی سیاست نہیں کی نفرت کی ، ایسی سیاست ملک کے مفاد میں بہتر نہیں، عمران خان کس طرح بینظیر کے قتل پر بات کرتے ہیں بینظیر کی شہادت پر پورا ملک ہل گیا، آرمی چیف، تمام سیاسی جماعتوں، جماعت اسلامی نے بھی تعزیت کی، جے آئی ٹی بنی اقوام متحدہ میں آواز اٹھائی گئی مگر عمران خان وا حد سیاستدان ہے جس نے بینظیر بھٹو کی شہادت پر تعزیت تک نہیں کی، عام انتخابات اپنے وقت پر ہی ہوں گے، ہم نے جمہوریت کیلئے قربانیاں دیں اور جمہوری نظام کو ہی فوقیت دیں گے، جمہوریت کیخلاف سازشوں میں نواز شریف شریک رہے۔ پیپلزپارٹی نے ہمیشہ ملکی معیشت کو ترجیح دی ، پیپلزپارٹی کے دور میں پاک افغانستان تعلقات بہتر تھے، سندھ حکومت صوبے میں بہتری کے ہر کام کر رہی ہے، اقلیتوں کیلئے کام کیا ، غربت اور بیروزگاری کے خاتمے کیلئے وسیلہ روزگار شروع کیا تھا جو اس حکومت نے ختم کیا اور ملک کا سب سے بڑا مسئلہ نوجوانوں کی بیروزگاری ہے، ہم4سال وزیر خارجہ لگانے کا کہتے رہے وزیر خارجہ نہ ہونے سے دنیا میں پاکستان کا منفی تاثر گیا اورملک کو نقصان ہوا اگر بھارت افغانستان میں انوسٹ کر رہا ہے تو پاکستان کو بھی کرنا چاہئے افغانستان میں امن پاکستان کیلئے ضروری ہے۔

بلاول بھٹو زرداری

مزید : صفحہ اول