شانگلہ میں ٹرانسپورٹ مالکان کی من مانیاں جاری

شانگلہ میں ٹرانسپورٹ مالکان کی من مانیاں جاری

الپوری(ڈسٹرکٹ رپورٹر) شانگلہ میں ٹرانسپورٹ مالکان کی من مانی برقرار ،لیلونئی ٹرانسپورٹ آڈہ مین روڈ پر غیر قانونی طور پر بحال۔مین روڈ پر اڈہ ہونے سے ٹریفک کی روانی میں شدید مشکلات کا سامنا ۔ضلعی انتظامیہ خاموش تماشائی کا کردار ادا کر رہی ہے ، غیرمحفوظ اور حساس ترین مقام پر اڈہ بنا کر نا خوشگوار واقعہ رونما ہونے کا شدید احتمال ، ضلعی عدالتوں اور ضلع انتظامیہ کے دفاتر کے اوپر لیلونئی مین روڈ پر اڈہ بنا کر ٹرانسپورٹ مافیا اپنے آپ کو بااثر اور ازاد سمجھ بیٹھ کر اپنا راج قائم کر چکی ہے ۔عوام کا کوئی پرسان حال نہیں ، اڈے کی مین روڈ پر ہونے سے مسافروں کو بھی شدید مشکلات کا سامنا۔ تحصیل میونسپل ایڈمنسٹریشن الپوری وٹرانسپورٹ اتھارٹی تو شانگلہ میں سرے سے فعال نظر ہی نہیں آرہی ،ضلعی انتظامیہ شانگلہ نے غیر قانونی طور پر قائم کردہ اڈوں کے مافیا کے سامنے گھٹنے ٹیک کردئے ہیں۔ مین روڈ پرٹرانسپورٹ آڈہ بنانے اورروڈ پر گاڑی کھڑی کرنے کے خلاف عوامی حلقے سراپا احتجاج بن گئی ۔ صوبائی حکومت اور کمشنر ملاکنڈ ڈویژن سے نوٹس لینے کا مطالبہ ۔ شانگلہ کے ضلعی ہیڈ کوارٹر الپوری کے ضلعی عدالتوں اورضلعی انتظامیہ کے دفاتر کے اوپر لیلونئی مین روڈ پرلیلونئی کیلئے ٹرانسپورٹ مافیا نے انتہائی کم اور نامناسب جگہ میں گاڑیوں کیلئے آڈہ بنایا ہے، اڈے کو رجسٹرڈ اڈے میں منتقل کیا جائے ، عوامی حلقوں کا مطالبہ۔مین روڈ پر کسی بھی جگہ پر اڈے نہیں ہوتے ، شانگلہ میں ٹرانسپورٹ مافیا کی راج کی وجہ سے مین روڈوں پر اپنی مرضی سے اڈہ قائم کرکے اس پر سالانہ لاکھوں روپے گاڑیوں سے بٹورتے ہیں ، ضلعی انتظامیہ شانگلہ ان مافیا کے خلاف کاروائی کیوں نہیں کر رہی ، عوامی حلقوں میں نئے سوالات جنم لے رہے ہیں ، لیلونئی اڈہ غیر محفوظ مقام پر ہے ، اڈہ متعلقہ جگہ منتقل نہیں کیا گیا تو سڑکوں پر نکلنے پر مجبور ہوجائیں گے، اہلیان لیلونئی۔الپوری کا مؤقف ۔ گاڑی زیادہ اور ان کیلئے جگہ انتہائی کم ہے ، تمام گاڑیاں مین روڈ پر کھڑے ہوتے ہیں جس سے رواں دواں ٹریفک شدید متاثر ہورہا ہے۔۔

مزید : پشاورصفحہ آخر