دشمنی پر چودھریوں نے لڑکی کو برہنہ کرکے گلیوں میں بھگایا، بچی مدد کیلئے چیختی رہی لوگ ڈر کے مارے گھروں سے نہ نکلے

دشمنی پر چودھریوں نے لڑکی کو برہنہ کرکے گلیوں میں بھگایا، بچی مدد کیلئے ...
دشمنی پر چودھریوں نے لڑکی کو برہنہ کرکے گلیوں میں بھگایا، بچی مدد کیلئے چیختی رہی لوگ ڈر کے مارے گھروں سے نہ نکلے

  

ڈیرہ اسماعیل خان (ویب ڈیسک) آئی جی صلاح الدین نے ڈی آئی خان میں نوعمر لڑکی کو برہنہ کرکے گلیوں میں بھگانے کے واقعہ کا نوٹس لے لیا۔ واقعہ کی ایف آئیا ٓر درج کرلی گئی ہے۔ تفصیلات کے مطابق بااثر غنڈوں نے لڑکی کو دشمنی کی بھینٹ چڑھادیا۔ معصوم لڑکی کو برہنہ کرکے گلیوں میں گشت پر مجبور کیا گیا۔ تھانہ چودہوان کی حدود میں گرہ مٹ کے 5 مسلح افراد نے ذاتی دشمنی کے باعث مخالف خاندان کی 16 سالہ بچی کو اس وقت برہنہ کرکے گاﺅں میں گھومنے پر مجبور کردیا جب وہ پانی بھر کے گھر واپس آرہی تھی۔

عینی شاہدین کے مطابق مسلح افراد نے اس چیختی چلاتی اور مدد کیلئے پکارتی برہنہ بچی کو چادر تک نہ لینے دی، کسی کے گھر میں پناہ بھی نہ لینے دی۔ مظلوم لڑکی جب بھی کسی گھر میں داخل ہوتی تو مسلح حملہ آوروں کے ڈر سے لوگ اسے باہر نکال دیتے۔ گاﺅں والوں کا کہنا ہے کہ بربریت کا یہر قص 1 گھنٹہ جاری رہا۔ حوا کی مظلوم بچی کی مدد کیلئے کوئی انسان سامنے نہ آیا۔ بچی کے ورثا تھانے رپورٹ درج کرانے گئے تو پہلے پولیس انہیں ٹالتی رہی لیکن جب خبر میڈیا تک پہنچی تو چودہوان تھانہ کی پولیس نے 5 ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کرلیا تاہم پولیس ابھی تک ملزمان کو گرفتار نہ کرسکی۔

دوسری جانب پولیس نے بااثر ملزمان کے ساتھ مل کر لڑکی کے بھائی پر بھی ایک مقدمہ درج کرادیا ہے تاکہ اس کے خاندان کو دباﺅ میں لایا جاسکے۔ واقعہ میڈیا پر آنے کے بعد انسپکٹر جنرل آف پولیس خیبرپختونخوا اصلاح الدین خان نے واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے ڈی آئی جی ڈیرہ اسماعیل خان کو تمام معاملات کی خود نگرانی کرنے کی ہدایت کی۔ جبکہ واقعہ کی ایف آئی آر بھی درج کرلی گئی، تاہم پولیس اب تک بااثر ملزمان کو گرفتار کرنے سے قاصر ہے۔

مزید : ڈیرہ اسماعیل خان