دو خاندانوں کے درمیان تنازعہ حوا کی بیٹی پر قیامت بن کر ٹوٹ پڑا ، 17 سالہ لڑکی کے ساتھ ایسا شرمناک سلوک کہ آپ کا خون بھی کھول اٹھے گا

دو خاندانوں کے درمیان تنازعہ حوا کی بیٹی پر قیامت بن کر ٹوٹ پڑا ، 17 سالہ لڑکی ...
دو خاندانوں کے درمیان تنازعہ حوا کی بیٹی پر قیامت بن کر ٹوٹ پڑا ، 17 سالہ لڑکی کے ساتھ ایسا شرمناک سلوک کہ آپ کا خون بھی کھول اٹھے گا

  

ڈیرہ اسماعیل خان( ڈیلی پاکستان آن لائن ) بدلے کی آگ میں تڑپنے والوں نے بھیانک داستان رقم کردی،  9 ملزموں نے پہلے 17 سالہ حوا کی بیٹی کو بد ترین تشدد کا نشانہ بنایا پھر بھرے بازار میں گھسیٹا،  پتھر کا دل رکھنے والے ظالموں کو ایک لمحے کے لیے بھی معصوم لڑکی پر ترس نہ آیا۔

نجی ٹی وی چینل ’’ 92 نیوز‘‘  کے مطابق یہ انسانیت سوز واقعہ ڈیرہ اسماعیل خان میں پیش آیا جہاں حوا کی بیٹی دو خاندانوں کی درینہ دشمنی کی بھینٹ چڑھ گئی، شیطان صفت انسانوں نے 17 سالہ لڑکی پر ظلم کی انتہا کر دی، 9 ملزمان بد ترین تشدد کے بعد لڑکی کو بازار میں گھسیٹتے رہے،اس سے بھی بڑا المیہ یہ ہوا کہ اہل علاقہ خاموش تماشائی بنے رہے ، کوئی مسیحا بھی لڑکی کی مدد کو نہ آیا۔ خبر میڈیا پر نشر ہوئی تو پولیس حرکت میں آئی، 9 میں سے 8 ملزمان کو گرفتار کر کے تحقیقات کا آغاز کر دیا گیا۔مقامی ایس ایچ او بشارت کے مطابق یہ واقعہ دو خاندانوں کے درمیان پرانی دشمنی کا شاخسانہ ہے لیکن علاقہ مکین کچھ اور ہی داستان سناتے ہیں، پنچایت نے معاملہ تو حل کروایا لیکن بدلے کی ضد نے انسانوں کو حیوان بننے پر مجبور کر دیا ہے ۔

مزید : ڈیرہ اسماعیل خان