حکومت کا تمام غیر کمپیوٹرائزڈ اسلحہ لائسنس منسوخ کرنے کا فیصلہ

حکومت کا تمام غیر کمپیوٹرائزڈ اسلحہ لائسنس منسوخ کرنے کا فیصلہ
حکومت کا تمام غیر کمپیوٹرائزڈ اسلحہ لائسنس منسوخ کرنے کا فیصلہ

  

 اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)حکومت نے 31 دسمبر 2017 کے بعد سے تمام غیر کمپیوٹرائزڈ ممنوعہ بور اسلحہ لائسنس منسوخ کرنے کا فیصلہ کیا ہے،وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کو سیکریٹری داخلہ کی جانب سے ممنوعہ بور اسلحہ لائسنس سے متعلق بریفنگ دی گئی۔

میڈیا رپورٹ کے مطابق بریفنگ کے دوران وزیراعظم کو بتایا گیا کہ 2010 سے 2012 کے دوران 19 ہزار 143 ممنوعہ بور اسلحہ لائسنس جاری کیے گئے جب کہ2013 کی نگران حکومت نے 25 ہزار 789 ممنوعہ بور اسلحہ لائسنس کیے۔ذرائع کے مطابق بریفنگ کے دوران وزیراعظم کو یہ بھی بتایا گیا کہ موجودہ حکومت نے 410 ممنوعہ بور اسلحہ لائسنس جاری کیے، واپڈا کو ممنوعہ بور کے 400 اسلحہ لائسنس جاری کیے گئے۔ذرائع نے بتایا کہ اجلاس میں 31 دسمبر 2017 کے بعد سے تمام غیر کمپیوٹرائزڈ اسلحہ لائسنس فیصلہ کیا گیا اور وزیراعظم نے وزارت داخلہ کو ممنوعہ بور اسلحہ لائسنس کا معاملہ کابینہ کے آئندہ اجلاس میں لانے کی ہدایت کی ، وزیراعظم نے ہدایت جاری کی کہ اسلحہ لائسنس کوشناختی کارڈاورنادراسے منسلک کیاجائے۔وزیراعظم کودی گئی بریفنگ میں بتایاکہ31دسمبرتک تمام لائسنسزکی دوبارہ توثیق کی تاریخ مقررہے۔ بریفنگ میں واضح کردیاگیاکہ 31دسمبرکے بعدتمام غیرکمپیوٹرائزڈلائسنسزمنسوخ ہوجائیں گے

مزید : قومی