وزیراعظم تاجروں کے مسال کو مستقل بنیادوں پر حل کروائیں: پیاف

وزیراعظم تاجروں کے مسال کو مستقل بنیادوں پر حل کروائیں: پیاف

  

لاہور (پ ر)کستان انڈسٹریل اینڈ ٹریڈرز ایسوسی ایشنز فرنٹ (پیاف) کے چیئرمین میاں نعمان کبیرنے دو دن کی ملک گیر ہڑتال کے بعد ایف بی آر کا تاجروں کے ساتھ عارضی بنیادوں پر تصفیہ پر رد عمل دیتے ہوئے وزیراعظم سے اپیل کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ ذاتی طور پر اس معاملے میں دلچسپی لیکر تاجروں کے مسائل کو طویل مدتی اور مستقل بنیادوں پر حل کروائیں کیونکہ کیونکہ وقتی حل معیشت کو غیر یقینی صورتحال سے نہیں نکال سکتا۔ چیئرمین پیاف میاں نعمان کبیر نے سیئنر وائس چیئرمین ناصر حمید کے ہمراہ پریس ریلیز جاری کرتے ہوئے کہا کہ آئی ایم ایف سے سخت شرائط پر معاہدے نے کاروبار تباہ کردیا ہے،تاجروں کے خریدو فروخت کے لیے شناختی کارڈ کی شرط کا خاتمہ اور فکسڈ ٹیکس جیسے مطالبات تسلیم کیے جائیں تاکہ کاروباری سرگرمیاں متاثر نہ ہوں۔انہوں نے کہا کہ معیشت تاجروں کے بغیر نہیں چل سکتی۔ آئی ایم ایف کے کہنے پربلاجواز ٹیکسوں کی نفاذ سے عام شہری سمیت تاجر برادری بھی پریشانی کا شکار ہے۔حکومت خریداری کیلئے شناختی کارڈ کی شرط کو مستقل بنیادوں پرختم کرے کیونکہ شناختی کارڈ کی شرط کاروباری سرگرمیوں میں رکاوٹ ہے 

جس سے کاروبار تباہ ہورہا ہے جس کی وجہ سے پوری کاروباری برادری اس کے خاتمہ کیلئے سراپا احتجاج ہے جس میں مزید شدت آسکتی ہے جس سے حکومت کے ریونیو میں کمی کے ساتھ ملکی معیشت بھی متاثر ہوگی لہذا یہ مسئلہ فوری حل کیا جائے۔انہوں نے کہا کہ عالمی سطح پر پاکستان کے لئے چیلنجز بڑھتے جا رہے ہیں اور ان کے عہدہ براہ ہونے اورملک کو بچانے کے لئے ریونیو اور برآمدات بڑھانا ضروری ہیں ورنہ ہمارا کوئی مستقبل نہیں ہو گا۔کاروباری ماحول کو بہتر بنانابھی اب کاروباری برادری کی خوشی کا نہیں بلکہ ملکی سلامتی کا معاملہ ہے۔ کاروبار ہونگے تو عوام کو روزگار اور حکومت کو ٹیکس ملے گا جس سے ملکی معیشت کو مستحکم کیا جا سکے گا جبکہ اس سلسلہ میں صنعتی شعبہ سمیت ہرسیکٹر کو ملکی ترقی میں ذمہ داری سے اپنا کردار ادا کرنا ہو گا۔حکومت کو اصلاحات روشناس کروانا ہونگی اورخام مال اورا سمگل شدہ اشیاء کی ا سمگلنگ کم کرنا ہو گی۔ ملک میں مینوفیکچرنگ کے عمل کی حوصلہ افزائی کرنا اب مجبوری ہے۔

مزید :

کامرس -