مہمند،پنڈیالی میں زمین کے تنازعہ پر جاں بحق نوجوان کو اب تک انصاف نہ مل سکا

  مہمند،پنڈیالی میں زمین کے تنازعہ پر جاں بحق نوجوان کو اب تک انصاف نہ مل سکا

  

مہمند (نمائندہ پاکستان) قبائلی ضلع مہمند اتمانزئی پنڈیالئی میں زمین کے تنازعہ پر فائرنگ میں جاں بحق ہونے والے نوجوان کو اب تک انصاف نہ مل سکا۔ قاتل ایس ایچ او کے ساتھ ملی بھگت کر کے باہر گھوم رہے ہیں۔ اعلیٰ حکام انصاف دلائے۔ ان خیالات کا اظہار قبائلی ضلع مہمند تحصیل پنڈیالئی اتمانزئی کے رہائشی یار محمد خان نے اپنے رشتہ داروں کے ہمراہ مہمند پریس کلب میں میڈیاء سے گفتگوں کے دوران کیا۔ انہوں نے کہا کہ اتما نزئی تحصیل پنڈیالئی میں ہمارا زمین ہے۔ جس کا کیس عدالت میں چل رہا ہے۔ اور مذکورہ زمین پر1984 ء سے ہم کاشت کر رہے ہیں۔ اور اس پر ہمارا قبضہ بھی ہے۔ مگر اب ایس ایچ او ہمیں زمین پر کاشت کرنے کی اجازت نہیں دے رہے ہیں۔ جب ہم زمینوں پر گئے تو اتمانزئی چوکی کے انچارج سجاد نے ہمارا فون بند کر دیا۔ اور اُلٹا مخالفین نے ہم پر فائرنگ شروع کر دی۔ جس کے نتیجے میں میرا نوجوان بھتیجا عمران ولد خان موقعہ پر جاں بحق ہو گیا۔ ہم نے فوری طور پر تھانہ یکہ غنڈ کے ایس ایچ او کو واقعے سے آگاہ کیا۔ اور ہم نے عبدالمالک ولد سید باز، حولدار ولد شیر ولی پر ایف آئی آر کی درخواست کی۔ اور اصل ملزم یعنی عبدالمالک کی یکہ غنڈ بازار میں موجودگی کی نشاندہی کی اس کے باؤجود بھی ایس ایچ او نے قاتل کی گرفتاری میں ٹال مٹول کر کے ان کو فرار کا موقع دیا۔حکومت ہمارے ساتھ انصاف کر کے ملوث اہلکاروں کے خلاف قانونی کاروائی کی جائے۔ چیف جسسٹس، وزیر اعظم، وزیر اعلیٰ اور گورنر ہمیں انصاف دلا کر ہماری دادرسی کریں۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -