پی ٹی وی میں نااہل‘سفارشی لوگوں کو نکالاجائے، فنکار برادری

پی ٹی وی میں نااہل‘سفارشی لوگوں کو نکالاجائے، فنکار برادری

  

لاہور(فلم رپورٹر)شوبز کے مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والی شخصیات کا کہنا ہے کہ 20سال سے پی ٹی وی پر نااہل اور سفارشی لوگوں کا قبضہ ہے جس کی وجہ سے اس قومی چینل کا معیار دن بدن گرتا جا رہا ہے۔جب ملک بھر کے تمام سٹیشنز کے اہم عہدوں پر آؤٹ آف ٹرن ترقی کرنے والے اے سی،ڈیزل مکینک،سیکیورٹی گارڈ،سٹینو ٹائپسٹ،کلرک اور ہیلپر تعینات ہوں گے تو اس ادارے کی ترقی ایک خواب کے سوا کچھ نہیں ہے۔پی ٹی وی کو لوٹنے والوں نے اس ادارے میں اپنے ذاتی مفاد کی خاطر جعلی ڈگریوں کے حامل لوگوں کو نوکریاں دیں جن کی وجہ سے ادارہ مزید تنزلی کا شکار ہوا ذرائع کے مطابق اس وقت ملک بھر کے تمام سٹیشنز پر 800سے زائد جعلی ڈگری کے حامل افراد اہم عہدوں پر فائز ہیں۔شاہد حمید،شان،معمر رانا،مسعود بٹ،پرویز کلیم،میگھا،ماہ نور،شاہدہ منی،محمد قوی خان،لائبہ علی،سہراب افگن،سٹار میکر جرار رضوی،یار محمد شمسی صابری،گلفام،ہانی بلوچ،اچھی خان،ذویا قاضی،مایا سونو خان،ڈیشی راج،آغا قیصر عباس،سدرہ نور،ندا چوہدری،آفرین خان،آفرین پری،آشا چوہدری،عامر راجہ،بی جی،سفیان احمد،انوسنٹ اشفاق،محرمہ علی،عباس باجوہ،آغا حیدر،شین فریال،نادیہ علی،سوھنی بلوچ،اشرف خان،عذرا آفتاب،حیدر سلطان،بابرہ علی،تابندہ علی،ڈاکٹر اجمل ملک،مختار احمد چوہان،فیصل بخاری،چوہدری اعجاز کامران،قیصر ثناء اللہ خان،حاجی عبد الرزاق،پریسہ،حنا ملک،شہزاد چندا،ہنی البیلا،حسن مراد،امان اللہ،نجم زیدی،ثمینہ بٹ،سرفراز وکی،بینا سحر،عائشہ جاوید،ابرار ہاشمی،وقاص کیدو،زری لعل،شہہ پارہ،ستارہ بیگ،لکی ڈیئر،طاہر نوشاد،مختار چن،اسد مکھڑا،شجر عباس،نواز انجم،احمد نواز،محسن گیلانی،دلاور ملک،عباس اشرف،افشین اشرف،بینا چوہدری اور دیگر کا کہنا ہے کہ ایک سازش کے تحت گزشتہ 20سالوں کے دوران سفارش اور ناجائز طریقے سے بھرتی ہونے والوں کو قانونی دائرے میں لانے کے لئے قومی اخبارات میں نئی نوکریوں کا اشتہار دیا گیا ہے جو کہ محض خانہ پوری کے سوا کچھ نہیں ہے۔اگر ہمارے قومی چینل نے مستقبل کی مناسب منصوبہ بندی کی ہوتی تو شاید یہ دن دیکھنا نہ پڑتا۔میرٹ کا دن رات شور مچانے والی حکومت اس صورتحال پر غور کیوں نہیں کررہی۔پی ٹی وی کے کارکنان نے وزیر اعظم عمران خان سے فوری طور پر مطالبہ کیا ہے کہ ادارے سے نااہل اور سفارشی لوگوں کو نکال کر حقدار لوگوں کو بھرتی کیا جائے تاکہ پی ٹی وی کو مکمل تباہی اور بربادی سے بچایا جاسکے۔یاد رہے کہ پاکستان ٹی وژن کارپوریشن کی یونین نے ملک بھر کے کارکنان کی جانب سے بڑھتے ہوئے دباؤ کے پیش نظر اپنے مطالبات کی منظوری کیلئے احتجاجی تحریک چلانے کی دھمکی دی ہے۔ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ احتجاجی تحریک چلانے کے حوالے یونین دو حصّوں میں تقسیم ہوچکی ہے موجودہ صدر آصف راحیل خان،جنرل سیکرٹری پرویز بھٹی اور ان کے چند قریبی ساتھیوں کا کہنا ہے کہ احتجاج کی بجائے ٹیبل ٹاک کے ذریعے معاملات حل کئے جائیں کچھ عرصہ قبل بھی پی ٹی وی ہیڈ کواٹر اسلام آباد کے سامنے مطالبات کی منظوری کے حوالے سے 7روزہ دھرنا دیا گیا تھالیکن کارکنان کی اکثریت نے اس موقع پر باہر نکلنے کی زحمت نہیں کی جس کی وجہ سے ناکامی کا سامنا کرنا پڑا۔

ذرائع نے یہ بھی بتایا کہ ملک بھر کے تمام سٹیشنز پر کام کرنے والے کارکنان نے صدر اور جنرل سیکرٹری کو کہا ہے کہ اگر انہوں نے اس بار ہماری بات نہ مانی تو ان کو بھی اس کے نتائج بھگتنے پڑیں گے یونین کے رہنما ہمارے مسائل حل کرنے کی بجائے اپنے مفادات کی خاطر خاموشی اخٹیار کئے ہوئے ہیں۔یاد رہے کہ آصف راحیل خان اور پرویز بھٹی تھوڑے عرصے بعد ریٹائر ہوجائیں گے اس لئے ان کو کارکنان کے مسائل کے حل میں کوئی دلچسپی نہیں۔

مزید :

کلچر -