نواز شریف کے دانتوں کی ریفلنگ مکمل، دل، گردوں کے مسائل سنگین 

نواز شریف کے دانتوں کی ریفلنگ مکمل، دل، گردوں کے مسائل سنگین 

  

لاہور (جنرل رپورٹر،نیوزایجنسیاں) نواز شریف کے پلیٹ لیٹس کی تعداد 39 ہزار تک پہنچ گئی جسکے بعد میڈیکل بورڈ ذرائع کا کہنا ہے کہ سابق وزیراعظم کو پلیٹ لیٹس کا مسئلہ نہیں رہا۔ نوازشریف کو پلیٹ لیٹس مزید بڑھانے کیلئے ادویات دی گئیں تو خطرہ ہوگا اسلئے آئی وی آئی جی کے انجکشن کی تھراپی روک دی گئی ہے، ذرائع کاکہناہے کہ نوازشریف 30ہزار پلیٹ لیٹس میں زندگی گزار سکتے ہیں کیونکہ انہیں بلیڈنگ کے خطرات اب کم ہیں مگر دل اور گردوں کے سنگین مسائل ہیں، ان کی حالت دل اور گردوں کی بیماریوں باعث نہیں سنبھل رہی۔اس سلسلے میں بدھ کے روز بھی میڈیکل بورڈ نے نواز شریف کا مکمل چیک اپ کیا۔ جس کے فوری بعد سابق وزیراعظم کے دانتوں کی ریفلنگ مکمل کی گئی۔ ریفلنگ کے حوالے سے پروفیسر ڈاکٹر محمود ایاز کا کہنا ہے کہ نواز شریف کے مسوڑھے اور دانت کمزور پڑ رہے تھے۔ میڈیکل بورڈ نے سابق وزیراعظم کا علاج سروسز ہسپتال میں بھی جاری رکھنے کا فیصلہ کیا ہے،بدھ کی صبح سابق وزیراعظم کو سروسز ہسپتال کے وی وی آئی پی بلاک سے ڈینٹل وارڈ لے جایا گیا تو نواز شریف اپنے پاؤ پر چل کر وارڈ تک پہنچے، میڈیکل بورڈ کے سربراہ بھی ان کے ساتھ تھے جبکہ نواز شریف نے حلقے نیلے رنگ کی شلوار قمیض پہن رکھی تھی۔ دوسری طرف الائیڈ ہیلتھ الائنس کی سرکاری ہسپتالوں میں ان ڈور ہڑتال کے باعث نواز شریف کے علاج پر مامورڈاکٹر اور عملہ کام چھوڑ گیا،سہ پہر تک ہسپتال انتظامیہ کوئی متبادل انتظام نہ کرسکی،اس حوالے سے ہسپتال کے ایم ایس ڈاکٹر سلیم شہزاد چیمہ سے بات کی گئی تو انہوں نے کہا کہ ہم نے فوری طور پر متبادل عملہ تعینات کر دیا سینئرز ڈاکٹرز اور تربیت یافتہ عملہ 24گھنٹے فراءٖض سر انجام دے رہا ہے۔نواز شریف کی سروسز ہسپتال کے وی وی آئی پی کمرے میں موجود ڈاکٹرز کی جانب سے علاج معالجہ کرنے کی تصویر حاصل کر لی گئی۔تصویر میں نواز شریف کا خون کے نمونے لیے جا رہے ہیں۔ قبل ازیں لاہور کی مقامی عدالت سے رہائی ملنے پر کیپٹن (ر) صفدر جیل سے سیدھے سروسز ہسپتال میں زیر علاج اپنے سسر نواز شریف کی عیادت کیلئے پہنچے۔ دوسری طرف جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمن اور مسلم لیگ (ن) کے قائد نواز شریف کے درمیان ملاقات منسوخ ہوگئی،نواز شریف کی صحت کی وجہ سے ڈاکٹرز نے مولانا فضل الرحمن کو ملاقات کی اجازت نہیں دی۔

نوازشریف 

مزید :

صفحہ اول -