کراچی، عباسی شہید اسپتال پر پولیس کا چھاپہ، پیء ار او سمیت 4افراد گرفتار

کراچی، عباسی شہید اسپتال پر پولیس کا چھاپہ، پیء ار او سمیت 4افراد گرفتار

  



کراچی(کرائم رپورٹر)کراچی کے علاقے ناظم آباد میں واقع سرکاری عباسی شہید اسپتال میں پولیس کی بھاری نفری نے محاصرہ کر کے سرچ آپریشن کیا۔سرکاری اسپتال عباسی شہید میں منگل اور بدھ کی درمیانی شب پولیس کی بھاری نفری نے محاصرہ کر لیا اور نقاب پوش افسران و اہلکاروں نے سرچ آپریشن کیا۔پولیس کی بھاری نفری نے ڈاکٹرز اپارٹمنٹس اور ٹراما سینٹر سمیت اسپتال کے دیگر کمروں کی تلاشی لی، اس دوران خاکروبوں اور وارڈ بوائے کو تشدد کا نشانہ بنایا۔آپریشن ٹیم نے پولیس موبائلز پر لکھے تھانوں کے نام کوڈ نمبر اور رجسٹریشن نمبر پلیٹز کو کاعذ کی مدد سے ٹیپ لگا کر چھپایا ہوا تھا۔ذرائع نے بتایا کہ چھاپے کے وقت 20 سے زائد پولیس موبائلز اور موٹر سائیکلیں تھیں۔سرچنگ کے دوران اسپتال کی اولڈ بلڈنگ میں واقع آئی ٹی ڈیپارٹمنٹ کے ایڈمنسٹریٹر نجف علی کے کمرے سمیت دیگر کمروں کے تالے توڑ کر متعدد کمپیوٹر ہارڈ ڈرائیو، لیپ ٹاپ اور دیگر دستاویزات اپنے قبضے میں لے لیں۔ڈیڑھ گھنٹے تک جاری رہنے والے آپریشن کے دوران پولیس نے اسپتال کے پی آر او شیخ راشد حسین، ارشد حشمت اور اسلم پرویز سمیت 4 افراد کو حراست میں لیکر منہ پر کپڑا ڈال کر نامعلوم مقام پر منتقل کردیا۔اسپتال کی سیکیورٹی پر مامور سٹی وارڈن نے الزام عائد کیا کہ پولیس نے سرچ آپریشن کے دوران انہیں بدترین تشدد کا نشانہ بھی بنایا، انہوں نے کہاکہ  پولیس نے غیر متعلقہ معلومات حاصل کرنے کی کوشش کی تھی۔عباسی شہید اسپتال میں پولیس کے چھاپے کے معاملے  پر سینئر ڈائریکٹر میڈیکل اینڈ ہیلتھ سروسز کے ایم سی ڈاکٹر سلمی کوثر نے بتایا کہ 4 ملازمین کو گرفتار کیا گیا ہے لیکن ابھی وجوہات سامنے نہیں آ سکیں۔انہوں نے کہا کہ اگر پولیس کو ملازمین مطلوب تھے تو ہمیں بتایا جاتا، ہم ان کے حوالے کر دیتے۔ انہوں نے کہاکہ ملازمین کو حراست میں لینے کا معاملہ آئی جی سندھ کے علم میں لایا جائے گا۔انہوں نے مئیر کراچی اور آئی جی سندھ سے نوٹس لینے کی اپیل کی ہے۔

مزید : صفحہ اول