محکمہ جنگلی حیات کے افسروں کو دفاتر چھوڑ کر فیلڈ میں نکلنے کی ہدایت

محکمہ جنگلی حیات کے افسروں کو دفاتر چھوڑ کر فیلڈ میں نکلنے کی ہدایت

  

لاہور(لیڈی رپورٹر)سیکرٹری جنگلات، جنگلی حیات و ماہی پروری کیپٹن (ر) محمد محمو د نے تمام افسران کو ہدایت کی ہے کہ وہ اپنے دفتر وں میں بیٹھنے کی بجائے 8سے 10دن فیلڈ میں گزاریں اور جاری ترقیاتی منصوبوں کی مانیٹرنگ کریں۔انہوں نے کہا کہ تمام افسران اپنے دوروں سے متعلق اپنی آبزرویشن اورعملی اقدامات بارے سیکرٹری آفس کو رپورٹ پیش کریں۔ احکامات پر عدم عملدرآرمدکی صورت میں افسران کو شوکاز نوٹسز جاری کئے جائیں گے۔انہوں نے ڈائریکٹر جنرل وائلڈلائف اینڈ پارکس کے دفتر میں سالانہ ترقیاتی پروگرام بارے جاری ترقیاتی سکیموں کے جائزہ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہی۔ اس موقع پر ڈی جی وائلڈلائف اینڈ پارکس پنجاب لیفٹیننٹ (ر)سہیل اشرف، ایڈیشنل سیکرٹری ٹیکنیکل شاہد رشید اعوان،ڈپٹی ڈائریکٹر وائلڈلائف ہیڈ کوارٹرز محمد نعیم بھٹی، ڈائریکٹر لاہور چڑیا گھر حسن علی سکھیرا، ڈپٹی سیکرٹری پلاننگ طارق محمود اور انچارج مانیٹرنگ اینڈ ایو یلیوایشن میاں حفیظ احمد کے علاوہ دیگر افسران بھی موجود تھے۔۔صوبائی سیکرٹری نے کہا کہ تمام افسران اپنے متعلقہ علاقوں میں جاری ترقیاتی منصوبوں پر خصوصی فوکس کریں۔

اور موجود وسائل سے زیادہ سے زیادہ سے استفادہ کیاجائے۔انہوں نے کہا کہ کسی بھی کام کیلئے انسانی وسائل اہمیت کے حامل ہیں مگر جدید ٹیکنالوجی کا استعمال اس سے بھی زیادہ اہم ہے اس لیے اس پر خصوصی توجہ دی جائے۔صوبائی سیکرٹری نے کہا کہ جانوروں کی کنزرویشن اور پروٹیکشن کے حوالے سے جاری منصوبوں کی تھرڈ پارٹی ایو یلیوایشن کروائی جائے۔ انہوں نے کہا کہ کمیونٹی بیسڈ آرگنائزیشنز کے رولز میں تبدیلی کیلئے پیش کردہ سمری فوری منظور کروائی جائے اور جہا ں جانوروں کی موجودگی کے زیادہ امکانات ہوں وہاں نئی کمیونٹی بیسڈ آرگنائزیشن تشکیل دی جائیں تاکہ مقامی آبادی کے ساتھ ملکر انہیں تحفظ فراہم کیاجائے تاکہ ان کی آبادی میں اضافہ ممکن ہو سکے

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -