کمرشل صارفین کا 66کروڑ 44 لاکھ روپے مالیت کی گیس چوری کرنے کا انکشاف

کمرشل صارفین کا 66کروڑ 44 لاکھ روپے مالیت کی گیس چوری کرنے کا انکشاف

  

اسلام آباد(آئی این پی)پارلیمنٹ کی ذیلی پبلک اکا ونٹس کمیٹی میں انکشاف ہوا ہے سوئی سدرن گیس کمپنی لمیٹڈ سے کمرشل صارفین نے 66 کروڑ 44 لاکھ روپے مالیت کی گیس چوری کی، کمیٹی نے معاملہ پی اے سی کی عملدرآمد و جائزہ کمیٹی کے سپرد کر دیا، کمیٹی نے ایس این جی پی ایل کی جانب سے خلاف ضابطہ 95ارب روپے میں خریدی گئی آر ایل این جی ایک کھرب 6 ارب روپے میں بیچنے کا معاملہ آئندہ کیلئے موخر کر دیا،کنوینرکمیٹی نے آڈٹ اعتراض پر وزارت قانون کے نمائندے کی عدم تیاری پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ سیکرٹری وزارت قانون کو خط لکھا جائے کہ وزارت کا جو بھی نمائندہ یہاں آتا ہے تیاری کے ساتھ آئے۔ پارلیمنٹ کی پبلک اکا ونٹس کمیٹی کی ذیلی کمیٹی کا اجلاس کنوینرسید نوید قمر کی صدارت میں ہوا،جس میں پیٹرولیم ڈویژن کے سال 2016-17 کے آڈٹ پیراز کا جائزہ لیا گیا،آڈٹ حکام نے انکشاف کیا کہ سوئی سدرن گیس کمپنی لمیٹڈ میں 2015-16کے دوران گیس چوری کے  1173 کیس ہوئے جن میں کمرشل صارفین کی جانب سے 664 ملین روپے کی گیس چوری کی گئی،کمیٹی نے معاملہ پی اے سی کی عملدرآمد و جائزہ کمیٹی کے سپرد کر دیا۔آڈٹ حکام نے کمیٹی کو بتایا کہ ایس این جی پی ایل نے خلاف ضابطہ 95 ارب روپے کی آر ایل این جی خریدی اور ایک کھرب چھ ارب روپے کی بیچی، کمیٹی نے انتظامیہ کی جانب سے معاملے پر مناسب حل نہ نکالنے پر آڈٹ پیرا آئندہ کیلئے موخر کر دیا، آڈٹ حکام نے کمیٹی کو بتایا کہ ایس ایس جی سی ایل  انڈسٹریل، کمرشل اور گھریلو صارفین سے 90ارب روپے ریکور نہیں کر سکا،ایس ایس جی سی ایل حکام نے بتایا کہ اس میں سے کچھ ریکوری کی گئی ہے،کمیٹی نے یہ معاملہ بھی آئندہ کیلئے موخر کردیا،کنوینر کمیٹی نے آڈٹ اعتراض پر وزارت قانون کے نمائندے کی عدم تیاری پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ سیکرٹری وزارت قانون کو خط لکھا جائے کہ وزارت کا جو بھی نمائندہ یہاں آتا ہے تیاری کے ساتھ آئے۔ آڈٹ حکام نے انکشاف کیا کہ ایس ایس جی سی ایل نے ایک کمپنی سے  4ارب 25کروڑ روپے سے زائد کے واجبات وصول نہیں کئے۔ سوئی سدرن گیس کمپنی حکام نے بتایا کہ ان کا کنکشن کاٹ دیا گیا، کمیٹی نے آڈٹ اعتراض کو موخر کردیا۔

گیس چوری/ انکشاف 

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -