حمل کے دوران پیراسٹامول ہرگز استعمال نہ کریں، سائنسدانوں نے حاملہ خواتین کو سخت وارننگ دے دی

حمل کے دوران پیراسٹامول ہرگز استعمال نہ کریں، سائنسدانوں نے حاملہ خواتین کو ...
حمل کے دوران پیراسٹامول ہرگز استعمال نہ کریں، سائنسدانوں نے حاملہ خواتین کو سخت وارننگ دے دی

  



نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) پیراسیٹا مول ہر گھر میں موجود ہوتی ہے اور لوگ معمولی درد یا تھکاوٹ کی صورت میں بھی اس کا بے دریغ استعمال کرتے ہیں تاہم اب سائنسدانوں نے حاملہ خواتین کے لیے اس گولی کا ایک انتہائی خطرناک نقصان بتا دیا ہے۔ میل آن لائن کے مطابق سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ پیراسیٹا مول جسے ٹائیلینول (Tylenol)اور اسیٹامینوفین (Acetaminophen)بھی کہا جاتا ہے، ماں کے پیٹ میں پرورش پاتے بچوں کے لیے انتہائی نقصان دہ ہوتی ہیں۔ جو مائیں دوران حمل یہ گولی کھائیں ان کے پیش میں موجود بچوں کو اے ڈی ایچ ڈی اور آٹزم جیسی بیماریوں اور دیگر معذوریوں میں مبتلا ہونے کا خطرہ دو گنا بڑھ جاتا ہے۔

اس تحقیق میں جانز ہاپکنز یونیورسٹی بلومبرگ سکول آف پبلک ہیلتھ کے سائنسدانوں نے سینکڑوں حاملہ خواتین کے پیٹ میں پرورش پاتے بچوں کی ’امبیلیکل کورڈ‘ (Umbilical Cord)سے خون کے نمونے لیے اور ان میں پیراسیٹا مول کی موجودگی کا پتا چلایا۔ بعد ازاں ان کے ہاں پیدا ہونے والے بچوں کی صحت کے ساتھ ان کا موازنہ کیا گیا۔ جس میں پتا چلا کہ جن کے امبیلیکل کورڈ میں پیراسیٹامول پائی گئی تھی ان میں سے کئی بچے ماں کے پیٹ میں ہی نشوونما کے بگاڑ کا شکار ہو گئے تھے۔ اس کے علاوہ ان میں آگے چل کر اے ڈی ایچ ڈی اور آٹزم سمیت دیگر کئی بیماریوں میں مبتلا ہونے کا خطرہ بھی دوسرے بچوں کی نسبت دوگناہ زیادہ تھا۔

مزید : تعلیم و صحت


loading...