جولائی تا ستمبر مہنگائی کی شرح 25.1فیصد رہی،بجٹ خسارہ 45.4فیصد برھا:وزارت خزانہ

  جولائی تا ستمبر مہنگائی کی شرح 25.1فیصد رہی،بجٹ خسارہ 45.4فیصد برھا:وزارت ...

  

        اسلام آباد(این این آئی)وزارتِ خزانہ کی جانب سے کہا گیاہے کہ جولائی سے ستمبر تک مہنگائی 25.1 فیصد رہی،۔وزارتِ خزانہ کی جاری کی گئی ماہانہ اقتصادی رپورٹ کے مطابق گنے کی پیداو ا ر8فیصد، چاول کی 40.6 اور کپاس کی پیداوار 24.6 فیصد کم ہوئی ہے جبکہ گندم کا پیداواری ہدف 28.37 ملین ٹن مقرر کیا گیا ہے۔رپورٹ میں وزارت خزانہ نے کہا ہے کہ جولائی سے ستمبر تک مہنگائی 25.1 فیصد رہی جو گزشتہ برس اسی عرصے میں 8.6 فیصد تھی۔رپورٹ کے مطابق عالمی مارکیٹ میں اکتوبر میں تیل کی قیمت کم ہوئی۔وزارتِ خزانہ کی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ مالی سال کی پہلی سہ ماہی میں بجٹ خسارہ 45.4 فیصد بڑھا، جولائی سے ستمبر تک بجٹ خسارہ 672 ارب روپے رہا، گزشتہ برس اسی عرصے میں بجٹ خسارہ 462 ارب روپے تھا۔رپور ٹ میں وزارتِ خزانہ کا کہنا ہے کہ جولائی تا ستمبر ترسیلاتِ زر 3.6 فیصد اور مجموعی سرمایہ کاری 83.7 فیصد کم ہوئی ہے۔رپورٹ کے مطابق جولائی تا ستمبر برآمدات میں 5.5 فیصد اضافہ ہوا جبکہ درآمدات 7.9 فیصد کم ہوئیں، اس دوران کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ 2 ارب 20 کروڑ ڈالرز رہا۔وزارتِ خزانہ کے مطابق مالی سال کی پہلی سہ ماہی میں ایف بی آر کے محصولات 17 فیصد بڑھے جبکہ 26 اکتوبر 2022 تک اسٹیٹ بینک کے ذخائر 8 ارب 88 کروڑ 40 لاکھ ڈالرز رہے۔ماہانہ اقتصادی رپورٹ میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ مجموعی معاشی صورتِحال بہتر نظر آ رہی ہے، مستحکم کرنسی کیلئے معیشت مضبوط ہونا ضروری ہے۔

وزارت خزانہ 

مزید :

صفحہ اول -