سزائے موت کے قیدی نے خودکشی کی ناکام کوشش کے بعد اپنا عضو مخصوصہ کاٹ ڈالا

سزائے موت کے قیدی نے خودکشی کی ناکام کوشش کے بعد اپنا عضو مخصوصہ کاٹ ڈالا
سزائے موت کے قیدی نے خودکشی کی ناکام کوشش کے بعد اپنا عضو مخصوصہ کاٹ ڈالا

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) امریکہ میں سزائے موت کے قیدی نے چند ہفتے قبل خودکشی کی ایک ناکام کوشش کے بعد گزشتہ روز اپنا عضو مخصوصہ کاٹ ڈالا۔ فوکس نیوز کے مطابق ہنری یوجین ہوجیز نامی اس مجرم نے 1990ءمیں ٹیلی فون مرمت کرنے والے کاریگر کو قتل کرڈالا تھا، جس کی پاداش میں عدالت کی طرف سے اسے سزائے موت سنائی گئی ہے اور وہ امریکی ریاست ٹینیسی کی ایک جیل میں قید ہے۔

ہنری یوجین کے ہاتھ چند ہفتے قبل ایک تیز دھار آلہ لگ گیا تھا جس سے اس نے اپنی کلائی کی نس کاٹ کر خودکشی کی کوشش کی تاہم اسے بروقت طبی امداد دے کر بچا لیا گیا تھا۔ گزشتہ روز اس کے ہاتھ ایک ریزر لگ گیا جس سے اس نے اپنا عضو مخصوصہ کاٹ کر پھینک دیا۔ 

اس خوفناک حرکت کے بعد اس کی چیخ و پکار سن کر جیل کا عملہ اس کے سیل میں پہنچا جہاں وہ خون میں لت پت تڑپ رہا تھا۔ اسے فوری طور پر ہسپتال لیجایا گیا جہاں اس کی حالت اب خطرے سے باہر بتائی جاتی ہے۔ رپورٹ کے مطابق ہنری یوجین پہلے بھی کئی بار خود کو نقصان پہنچانے کی کوشش کر چکا ہے اور اسے زیرنگرانی رکھا گیا تھا۔ جیل انتظامیہ کا کہنا ہے کہ ہنری یوجین تک ریزر کیسے پہنچا، اس معاملے کی تحقیقات کی جا رہی ہیں۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -