Daily Pakistan

دو پاکستانی نظریہ

رقص زنجیر پہن کر بھی کیا جاتا ہے

پاسبان نہیں ،نگہبان اب نہیں

موت لائی، کیسی یہ تبدیلی آئی

آسمانی مخلوق سے سپہ سالار تک

آؤ ہم بھی سیر کرائیں تم کو پاکستان کی

بنیان دھوتی کاش میری ہوتی

زرداری کی کرپشن سب پر بھاری 

تیار تیرا ہے پھر سے مقتل

اودھا ، نیلا ، لال ،پیلا آسمان

دہری شہریت نے میرے ہاتھ باندھ دئیے ہیں 

کہاں سے لائیں تیری کھلی ہوائیں

بات ہنسی میں نہ اڑاؤ لوگو

مِس فائرڈ میزائیل

میں نہیں مانتا ،میں نہیں جانتا

وچوں وچوں کھائی جاؤ ،اتْوں نعرے لائی جاؤ

مزیدخبریں