ایجوکیشن سیکٹر روڈ میپ پروگرام کے مثبت اثرات سامنے آرہے ہیں،رانا مشہود

لاہور(ایجوکیشن رپورٹر)محکمہ سکول ایجوکیشن کے زیر اہتمام کریکلم کے نفاذ کے فریم ورک کی تعارفی تقریب گزشتہ روز ایک مقامی ہوٹل میں ہوئی صوبائی وزیر تعلیم رانا مشہود احمد خاں تقریب کے مہمان خصوصی تھے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیر تعلیم نے کہا کہ حکومت پنجاب کے ایجوکیشن سیکٹر روڈ میپ پروگرام کے مثبت اثرات سامنے آئے ہیں اس سے جہاں فروغ تعلیم میں نمایاں مدد ملی ہے وہاں پر شعبہ تعلیم کے مسائل کا بھی اندازہ ہوا ہے اسی طرح تعلیمی اداروں میں عدم دستیاب سہولیات کی فراہمی ممکن ہوئی ہے۔ ماضی میں ہر سال 5تا9سال عمر کے 24لاکھ بچے سکولوں میں داخلہ لیتے تھے گزشتہ سال یہ ٹارگٹ 28لاکھ مقر ر کیا گیا تھا جس کے مقابلے میں 34لاکھ بچوں نے سکولوں میں داخلہ لیا یہ تعداد حکومت کی تعلیمی پالیسیوں کی کامیابی اور فعالیت کا بین ثبوت ہے۔ انہوں نے اس امر پر اپنے اطمینان کا اظہار کیا کہ پاکستان کا گراﺅتھ انڈکس ترقی کررہاہے۔ اس حوالے سے حکومت پنجاب اور وفاقی حکومت آپس میں مل کرقومی ترقی کے لیے کوشاں ہےں۔ وزیر تعلیم نے بتایا کہ کریکلم ڈویلپمنٹ کے لیے ملک بھر سے بہترین ماہرین کی خدمات حاصل کی گئیں تاکہ ایسا کریکلم ڈویلپ کیا جائے جس سے طالب علم رٹے کے بجائے اپنے نصاب میں دلچسپی لیں ۔قبل ازیں تقریب سے پنجاب کریکلم و ٹیکسٹ بک بورڈ کے ایم ڈی نوازش علی، GIZپاکستان کی پرنسپل ایڈوائزر برائے بیسک ایجوکیشن پروگرام ڈاکٹر ڈگمار آرڈ گلیڈویز، پرنسپل ٹیکنیکل ایڈوائزر نگہت لون اور ڈائریکٹوریٹ آف سٹاف ڈویلپمنٹ کے پروگرام ڈائریکٹر احسان بھٹہ نے خطاب کیا۔ تقریب میں پنجاب ایجوکشن فاﺅنڈیشن کے چیئرمین انجینئرقمر الاسلام راجہ نے بھی شرکت کی۔