سمر کیمپ لگانے والے پرائیویٹ سکولوں کو بند کرنے کے خلاف احتجاجی مظاہر

لاہور (خبرنگار) پرائیویٹ سکولوں کے مالکان نے سمر کیمپ لگانے والے پرائیویٹ سکولوں کو بند کرنے کے خلاف آل پاکستان پرائیویٹ سکولز مینجمنٹ ایسوسی ایشن کے مرکزی صدر ادیب جاودانی کی قیادت میں ایک احتجاجی مظاہرہ کیا۔ ادیب جاودانی نے مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اس مرتبہ پنجاب حکومت نے موسم گرما کی 83چھٹیاں دی ہوئی ہیں۔ سال کے 365دنوں میں 146دن سکول کھلتے ہیں جبکہ 219چھٹیاں ہوتی ہیں ان چھٹیوں کی وجہ سے طلباء و طالبات اپنا سلیبس مکمل نہیں کرپاتے اور اکثر بچے فیل ہو جاتے ہیں۔ یہ چھٹیاں کم کی جائیں۔ پنجاب میں 24مئی کے بعد کھلنے والے 5ہزار پرائیویٹ سکولوں کو سیل کر دیا گیا ہے۔ سکولز بچوں کو پڑھا رہے تھے کوئی جرم نہیں کر رہے تھے سیل کئے ہوئے سکولوں کو کھول دیا جائے اور جو کھلنے والے سکولوں کی رجسٹریشن کینسل کی گئی ہے وہ بھی بحال کی جائے۔

انسپکشن ٹیموں میں راشی افسران بھی ہیں جو پرائیویٹ سکولوں کے مالکان کو ڈرا دھمکا کر آئے روز ان سے رشوت وصول کر رہے ہیں ان راشی افسران کے خلاف کارروائی کی جائے۔ انہوں نے کہا کہ پورے پنجاب میں ہزاروں اکیڈیمیاں کھلی ہوئی ہیں ان اکیڈیمیوں میں لاکھوں بچے روزانہ پڑھ رہے ہیں ان اکیڈیمیوں کو تو بند نہیں کیا جا رہا جبکہ ہمارے سکولوں میں سمر کیمپ لگانے والوں کو بند کیا جا رہا ہے یہ ہمارے ساتھ ایک بہت بڑا ظلم ہے ہم بچوں کو پڑھا رہے ہیں کوئی جرم نہیں کر رہے۔ ہمارا وزیر اعلیٰ پنجاب سے مطالبہ ہے کہ ان چھٹیوں کے دوران جن سکولوں کو سیل کیا گیا ہے ان کی سیلیں کھولی جائیں اور جن سکولوں کی رجسٹریشن کینسل کی گئی ہے وہ بحال کی جائے اور ہمیں سمر کیمپ لگانے کی اجازت دی جائے اگر پنجاب حکومت نے ہمارے مطالبات تسلیم نہ کئے تو ہم ملک بھر میں احتجاج کا سلسلہ شروع کر دیں گے۔