واقعہ معراج حوصلہ شکن ماحول میں امید و یقین کا پیغام ہے : پروفیسر ساجد میر

لاہور (نمائندہ خصوصی) امیر مرکزی جمعیت اہل حدیث پاکستان سینیٹر پروفیسر ساجد میر نے کہا ہے کہ واقعہ معراج تاریخ انسانی کا نہایت محیر العقول اور سیرت رسول ﷺ کا بے مثال معجزہ ہے۔ معجزات نبوی میں اللہ تعالی نے عبرت اور نصیحت کے بے شمار پہلو رکھے ہیں۔ جامعہ ابراہیمیہ میں جمعہ کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ اس عظیم الشان سفر میں عطا کردہ تحفہ نماز در اصل ہر مشکل اور پریشانی کو دور کرنے اور ہر غم والم سے نجات پانے کا خدائی کا نسخہ ہے، ناسازگار ماحول میں اللہ تعالی سے مدد طلب کرنے کے لئے نماز سے بڑھ کر کوئی اور ذریعہ نہیں ۔ انہوں نے کہا کہ معراج کا واقعہ مسلمانوں کی دلداری اور طمانیت کا سامان ہے کہ وہ مصیبت اور مایوس کن حالات کی وجہ سے حوصلہ نہ ہاریں،بلکہ اس طرح کے واقعات ان کے پائے استقامت کو مضبوط تر کرتے ہیں اور خدا پر ان کا یقین بڑھتا جاتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ واقعہ معراج ان جاں گسل حالات میں،اور حوصلہ شکن ماحول میں بھی امید و یقین کا پیغام دیتا ہے،اور سربلندی و عروج کی خدائی منصوبہ بندی کی طرف اشارہ کرتا ہے۔کیوں کہ جب ایمان والے دین حق پر استقامت کے ساتھ جمے رہیں گے اور حالات کا مقابلہ کرتے رہیں گے وہ پھر وہی خدائی قدر ت پستیوں سے نکال کر سربلندیوں پر پہنچائے گی، جن کوذلیل و حقیر سمجھاجاتا رہا ان کے سر عزت و وقار کا تاج رکھے گی۔