30برس میں پروان چڑھنے والی دہشتگردی 2برس میں ختم نہیں ہو سکتی : معین الدین حیدر

لاہور(خصوصی رپورٹ)پلڈاٹ کی اشاعت’’ پیپلز نیپ ‘‘نے 20نکات پر مشتمل قومی ایکشن پلان پر عملدرآمد کو شہریوں کیلئے آسان بنا دیا ۔’پیپلز نیپ‘ پلڈاٹ کی جانب سے منعقدہ ایک عوامی فورم میں جاری کیا گیا جس میں معروف تجزیہ نگار مجیب الرحمن شامی ، سابق وزیر داخلہ لیفٹیننٹ جنرل(ر) معین الدین حیدر، سابق گورنر سندھ اور سابق وزیر داخلہ ماورا خان، پلڈاٹ کے صدراحمد بلا ل محبوب نے شرکت کی ۔پبلک فورم میں صحافی حبیب اکرم ، رؤف طاہر، حفیظ اللہ نیازی ، تحریک انصاف کے ایم پی اے ڈاکٹر مراد راس،مسلم لیگ(ق) کے ایم پی اے مسٹر وکاس راس حسن مکول، مسلم لیگ(ن)کے ارکان صوبائی اسمبلی ، وحید گل اور عظمیٰ بخاری شامل تھیں ۔ پبلک فورم سے خطاب کرتے ہوئے مجیب الرحمن شامی نے کہاکہ قومی ایکشن پلان سول اور ملٹر ی قیادت کے مابین ایک متفقہ دستاویزہے تاہم پاکستان کے کریمینل جسٹس سسٹم میں پیش رفت نہ ہونے کی وجہ سے بہتری نہیں آئی ۔لیفٹیننٹ جنرل (ر)معین الدین حیدر نے کہا کہ قومی ایکشن پلان ایک جہد مسلسل ہے ، 30برسوں میں پروان چڑھنے والی دہشتگردی کو دوبرسوں میں ختم نہیں کیا جاسکتا۔ لیفٹیننٹ جنرل(ر) معین الدین حیدر نے قومی ایکشن پلان پر عملدرآمد میں پیش رفت پر پنجاب حکومت کی کوششوں کو سراہا۔ اس موقع پر ماورا خان نے کہا کہ ریاست اور سماج کے درمیان قومی ایکشن پلان پر عملدرآمد کے حوالے سے رابطے کا فقدان ہے ۔پاکستان مسلم لیگ ن کے رکن صوبائی اسمبلی وحید گل نے کہا کہ قومی ایکشن پلان پر عملدرآمد کیلئے تمام شراکت داروں میں مشاورت کی جانی چاہیے ۔ عظمیٰ بخاری نے کہاکہ پاکستانیوں کو اپنی پارٹی وفاداریوں سے بالا تر ہوکر پاکستان کو ترجیح دینی چاہیے ۔ پاکستان کی سرزمین کسی کے خلاف استعمال نہیں ہونی چاہیے ۔ پلڈاٹ کے صدر احمد بلال محبوب نے فورم پر پیپلز نیپ پر تفصیلی بریفنگ دی جس میں انہو ں نے 20نکات پر متعلقہ شراکت داروں کے کردار پر روشنی ڈالی ۔

پلڈاٹ/پبلک فورم