جس طالبعلم کی حاضری 75فیصد سے کم ہو گی اس کو امتحان کی اجازت نہیں ، مشتاق غنی

 پشاور( پاکستان نیوز)وزیر اعلی خیبر پختونخوا کے مشیر اطلاعات و تعلقات عامہ اور اعلیٰ تعلیم مشتاق احمد غنی نے گزشتہ روز اپنے دورہ ملاکنڈ کے دوران گورنمنٹ کالج بوائز اینڈ گرلز تھانہ، گورنمنٹ منیجمنٹ سائنسزکالج اور فرنٹےئر ایجوکیشن فاؤنڈیشن کے گرلز کالج کا اچانک دورہ کیا اور مذکورہ کالج میں صفائی، طلبا و طالبات کی حاضری اور کالج کی انتظامی امور کا جائزہ لیا ۔گورنمنٹ منیجمنٹ سائنسز کالج کے دورے کے دوران مشیر اعلیٰ تعلیم نے طلبا ء کی کلاسز میں کم حاضری کا سختی سے نوٹس لیتے ہوئے کالج انتظامیہ اور طلبا ء کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ جس طالب علم کی حاضری 75%سے کم ہو گی اس کو سالانہ امتخانات میں کسی بھی صورت بیھٹنے کرنے کی اجازت نہیں ہوگی۔انہوں نے اس موقع پر طلباء کے ساتھ بات چیت بھی کی اور ان کے مسائل بھی سنے ۔صوبائی حکومت کی ترجمان نے ایف ای ایف گرلز کالج ملاکنڈ کے دورہ کے دوران کالج انتظامیہ کو داخلے جاری رکھنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ صوبائی حکومت محکمہ فنانس سے نئی پوسٹوں کی منظوری کے بعد صوبے کے 9ایف ای ایف کالجز کو محکمہ اعلیٰ تعلیم کی تحویل میں دے گا۔ایف ای ایف کالجز کو بند کرنے کا کوئی ارادہ نہیں ہے۔گورنمنٹ کالج فار بوائز تھانہ کے دورہ کے دوران مشتاق غنی نے زلزلے کے دوران کالج کے بعض متاثر ہونے والے حصوں کی دوبارہ اب تک تعمیر نہ ہونے پر نوٹس لیتے ہوئے معاملہ جلد از جلد محکمہ کمیونیکیشن اینڈ ورکس کے ساتھ اٹھانے کے ہدایت کی۔انہوں نے اس موقع پر کالج میں جاری سالانہ امتخانات کا بھی معائنہ کیا ۔اس موقع پر انہوں نے کہا کہ کالج کی کارکردگی جانچنے کیلئے مانیٹرنگ ٹیمیں تشکیل دے دی گئی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ صوبائی حکومت اپنے بچوں کے مستقبل پر کوئی سمجھوتہ نہیں کر سکتی۔