Daily Pakistan
احمد فراز

احمد فراز  بے انتہا مقبول پاکستانی شاعر  ( یوم پیدائش 12 جنوری  1931ء کوہاٹ خیبر پختونخواہ  ، - یوم وفات 25 اگست، 2008ء اسلام آباد ). اصل نام سید احمد شاہ ، جو اپنے قلمی نام احمد فراز سے مشہور ہیں ، وہ ایک پاکستانی اردو شاعر ، اسکرپٹ رائٹر اور پاکستان اکیڈمی آف لیٹرز کے چیئرمین تھے۔ انہوں نے اپنی شاعری فراز کے تخلص سے لکھی۔ اپنی زندگی کے دوران ، انہوں نے ملک میں فوجی حکمرانی اور بغاوت کی تنقید کی اور انہیں فوجی آمروں نے بے گھر کردیا تھا۔

اُس کی نوازشوں نے تو حیران کر دیا

وحشتیں بڑھتی گئیں ہجر کے آزار کے ساتھ

وہ جو آجاتے تھے آنکھوں میں ستارے لے کر

شہرِ محبت ، ہجر کا موسم ، عہدِ وفا اور میں

چلی ہے شہر میں کیسی ہوا اُداسی کی

اس سے پہلے کہ بے وفا ہو جائیں

تجھ سے مل کر تو یہ لگتا ہے کہ اے اجنبی دوست

اک شب تھا وہ مہمان میرا

تجھ پر بھی نہ ہو گمان میرا

ہجرِ جاناں کی گھڑی اچھی لگی

ہر کوئی دل کی ہتھیلی پہ ہے صحرا رکھے

آنکھوں میں سِتارے تو کئی شام سے اُترے

ہر دوا درد کو بڑھا ہی دے

سُنا تو ہے کہ نگارِ بہار راہ میں ہے

جس سمت بھی دیکھوں نظر آتا ہے کہ تم ہو

کہا تھا کس نے کہ عہدِ وفا کرو اُس سے​

یوں تو پہلے بھی ہوئے اُس سے کئی بار جدا

سنا ہے لوگ اسے آنکھ بھر کے دیکھتے ہیں                                                

سب لوگ لِئے سنگِ ملامت نکل آئے

یادِ جاناں سے کوئی شام نہ خالی جائے

مزیدخبریں