سابق پرنسپل سیکرٹری فواد حسن فواد کے جسمانی ریمانڈ میں یکم اکتوبر تک توسیع

سابق پرنسپل سیکرٹری فواد حسن فواد کے جسمانی ریمانڈ میں یکم اکتوبر تک توسیع

لاہور(نامہ نگار)احتساب عدالت نے آشیانہ سکینڈل کیس میں گرفتار سابق وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف کے سابق پرنسپل سیکرٹری فواد حسن فواد کے جسمانی ریمانڈ میں یکم اکتوبر تک توسیع کردی ہے ۔احتساب عدالت میں نیب نے فواد حسن فواد کو ریمانڈ ختم ہونے پر پیش کیا۔ پراسیکیوٹر وارث جنجوعہ نے استدعا کی کہ ملزم سے پوچھ گچھ کا سلسلہ جاری ہے، 5کروڑ کی رقم جو فواد کے بھائی وقارکے اکاؤنٹ اور پھر ان کی بیگم کے اکاؤنٹ میں آئی اس رقم کے حوالے سے تفتیش کو آگے بڑھانا ہے،یہ بھی معلوم ہوا ہے یہ رقم کامران کیانی کے اکاؤنٹ سے منتقل کی گئی ہے۔ فواد حسن کے بھائی وقارحسن کے ذرائع آمدن مطابقت نہیں رکھتے ،حالانکہ وقار حسن خود کو بزنس مین ظاہر کرتے ہیں مگر ان کے اکاؤنٹ سے یہ ظاہر نہیں ہوتا۔عدالت کو بتایا گیا کہ آشیانہ کی تعمیرات کے ٹھیکے کی منظوری کا مرحلہ مکمل ہونے کے بعد رقم ٹرانسفر ہوئی۔یہ بھی معلوم ہوا ٹھیکہ لینے والی کمپنی کے اکاؤنٹ سے 3کروڑ روپے کی رقم وقارحسن کے ا کاؤنٹ میں گئی۔ عدالت میں فواد حسن فواد کے وکیل قاضی مصباح ایڈووکیٹ کاکہنا تھا کہ کاروباری لین دین کو جرم تصور کیا جا رہا ہے۔ فواد کے بھائی نے کاروبار کے لئے 2ارب روپے کا قرضہ لیا تھا۔فواد حسن سے تفتیش مکمل ہو چکی ہے ،وہ 75روز سے ان کی تحویل میں ہیں لہذا ان کا ریمانڈ نہ دیا جائے۔ عدالت نے وکلا ء کے دلائل اور ریکارڈ دیکھنے کے بعد فواد حسن فواد کا نیب کو یکم اکتوبر تک جسمانی ریمانڈ دیتے ہوئے سماعت آئندہ پیشی تک ملتوی کردی۔

مزید : صفحہ اول