وزیراعظم جنرل اسمبلی میں بھارتی تخریب کاری کا معا ملہ بھی اٹھائیں ، سراج الحق

وزیراعظم جنرل اسمبلی میں بھارتی تخریب کاری کا معا ملہ بھی اٹھائیں ، سراج ...

  

لاہور(خبر نگار خصوصی)امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹرسراج الحق نے کہا ہے کہ وزیر اعظم کو جنرل اسمبلی میں کشمیر پر قومی موقف کو پوری جرأت کے ساتھ پیش کرنا چاہئے ۔وزیر اعظم کو نہ صرف کشمیر بلکہ بنگلا دیش میں عدالتی قتل عام ،مودی کے پاکستان کو توڑنے کے اعتراف اور بلوچستان میں بھارتی تخریب کاری کے معاملات کو بھی اٹھانا چاہئے ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے منصورہ میں مرکزی میڈیا ٹیم کے ذمہ داران کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہا کہ اگر وزیر اعظم نے مصلحت پسندی اور خاموشی سے کام لیا تو یہ پاکستان اور کشمیر کی خیر خواہی نہیں ہوگی ۔ عوام اگر کرپشن کے خلاف اٹھ کھڑے ہوئے ہیں تو یہ کوئی غیر آئینی یا غیر قانونی اقدام نہیں البتہ ڈنڈوں اور گنڈاسوں سے سیاسی کارکنوں کو ہراساں کرنا اور عوام کے اندر ایک خوف پھیلانا دہشت گردی کے زمرے میں آتا ہے ۔ حکومت کو انتشار اور انارکی سے بچنے کیلئے مار دھاڑ کی باتیں کرنے والوں کو روکنا چاہئے ۔ عوام میں یکجہتی اور اتحاد کی فضا پیدا کرنے کیلئے حکمران پارٹی سمیت تمام سیاسی جماعتوں کو اپنے کارکنوں کو صبر و تحمل اور سیاسی رواداری کا درس دینا چاہئے۔ملک ڈنڈے سوٹے کے کلچر کا متحمل نہیں ہوسکتا اور حالات کو بلاوجہ انارکی کی طرف دھکیلنے والے کسی صورت بھی ملک و قوم کے خیر خواہ نہیں ہوسکتے ۔ لوٹی گئی دولت کی واپسی تک ہم لٹیروں کا پیچھا کریں گے اور اقتدار کے ایوان کرپٹ ٹولے کو تحفظ نہیں دے سکیں گے ۔اپوزیشن جماعتوں کو بھی کرپٹ عناصر سے پیچھا چھڑانا اور اپنی صفوں کوقومی مجرموں سے پاک کرنا ہوگا۔جن لوگوں کے دامن پر کرپشن کے دھبے ہیں وہ کسی رعایت کے مستحق نہیں ۔فیصل آباد میں 30ستمبر کا کرپشن کے خلاف عوامی دھرنا لٹیروں کی نیند حرام کردے گا۔اس موقع پر ڈپٹی سیکرٹری جنرل ڈاکٹر فرید احمد پراچہ ، محمد اصغر، امیر العظیم ،محمد انور خان نیازی ،قیصر شریف ،راجا محمد اکرم، فاروق چوہان اور فرحان شوکت بھی موجود تھے ۔سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ کرپشن کے خلاف تحریک کا آغاز ہم نے کیا اور ان شاء اللہ اس کو منطقی انجام تک بھی ہم ہی پہنچائیں گے ۔

سراج الحق

مزید :

پشاورصفحہ اول -