مردان، انٹی کارلفٹنگ سیل کی کوششوں سے کروڑوں کی 28گاڑیاں برآمد

  مردان، انٹی کارلفٹنگ سیل کی کوششوں سے کروڑوں کی 28گاڑیاں برآمد

  

مردان (بیورورپورٹ)مردان پولیس انٹی کارلفٹنگ سیل نے ایک ماہ کے دوران کروڑوں روپے مالیت کی 28 چوری شدہ گاڑیاں برآمد کرلیں اس حوالے سے ڈی پی او ڈاکٹر زاہد اللہ خان نے اس حوالے سے ہنگامی پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ انٹی کارلفٹنگ سیل نے گذشتہ ایک ماہ کے دوران جدید انفارمیشن ٹیکنالوجی وہیکل ویریفیکیشن سسٹم کے ذریعے چوری شدہ گاڑیوں کے خلاف کامیاب کاروائیاں کیں جس کے دوران ملک بھر کے مختلف صوبوں اور اضلاع سے سرقہ شدہ 28 اور 3نان کسٹم پیڈگاڑیاں برآمدکرلی گئی ہیں جن میں 3 گاڑیوں پر قانونی تقاضے مکمل ہوکر عدالت کے حکم پر مالکان کوواپس کردی گئی ہیں ڈی پی او نے کہا کہ برآمد شدہ گاڑیوں کے متعلق صوبہ پنجاب، سندھ،لاہور، اسلام آباد اورملک کے دیگر اضلاع کے مختلف تھانوں میں چوری کے ایف آئی آر درج ہیں۔انٹی کار لفٹنگ سیل جرائم کی روک تھام،امن و امان کی بحالی اور دیگر انتظامی معاملات کے لئےVVS(وہیکل ویریفیکشن سسٹم) جدید ٹیکنالوجی کے استعمال کوبروئے کارلارہاہے جسکے لئے ڈی پی او آفس میں علیٰحدہ اے سی ایل کمپیوٹر سیل موجود ہے جس کے ذریعے چوری شدہ گاڑیوں کا ریکارڈ آسانی کے ساتھ چیک کیا جاسکتا ہے۔ اس نظام کے تحت چوری شدہ گاڑیوں کا ریکارڈ پولیس سٹیشنوں،پولیس پوسٹوں اور سنیپ چیکنگ پوائنٹس کو فراہم کردی گئی ہیں اورچیک پوسٹوں،ناکہ بندیوں پر تعینات پولیس عملہ گاڑیوں کی تصدیق آن لائن کرتا ہے۔ڈی پی او نے مزید کہا کہ انٹی کارلفٹنگ سیل کمپیوٹرائزڈ ڈیٹا بیس میں مزید بہتری لائی جائیگی اور مردان ریجن کے تمام اضلاع سے سرقہ شدہ گاڑیوں کا ریکارڈطلب کرکے پورے ریجن کی چوری شدہ گاڑیوں کابھی ڈیٹا بیس بنایا جا ئے گا۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -