گوگل میپس استعمال کرنے سے آپ کی صحت کو کیا نقصان پہنچتا ہے؟ سائنسدانوں نے حیران کن انکشاف کردیا

گوگل میپس استعمال کرنے سے آپ کی صحت کو کیا نقصان پہنچتا ہے؟ سائنسدانوں نے ...
گوگل میپس استعمال کرنے سے آپ کی صحت کو کیا نقصان پہنچتا ہے؟ سائنسدانوں نے حیران کن انکشاف کردیا

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) پہلے تو لوگ کسی اجنبی شہر میں ہوتے تو لوگوں سے اپنی منزل کا پتا پوچھتے تھے لیکن اب ٹیکنالوجی نے گوگل میپس جیسی سہولت دے دی ہے، چنانچہ لوگ اپنے موبائل فون پر گوگل میپس کے ذریعے جہاں چاہیں چلے جائیں۔ تاہم اب سائنسدانوں نے یہ سہولت استعمال کرنے والوں کے لیے ایک بری خبر سنا دی ہے۔ میل آن لائن کے مطابق سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ ”جو لوگ گوگل میپس یا دیگر ایسی سروسز استعمال کرتے ہیں انہیں ’الزیمرز‘ کی بیماری لاحق ہونے کا خطرہ بہت زیادہ ہو جاتا ہے۔ “ سائنسدانوں کا کہنا تھا کہ ”ڈیوائسز پر زیادہ انحصار لوگوں کو حقیقی دنیا سے الگ کر دیتا ہے جس کے ان کی ذہنی و جسمانی صحت پر انتہائی منفی اثرات مرتب ہوتے ہیں۔انہی میں سے ایک الزیمر کا شکار ہوجانا بھی ہے۔“

تحقیقاتی ٹیم کے سربراہ اور نیوی گیشن کے ماہر ڈیوڈ بیری کا کہنا تھا کہ ”ہزاروں سالوں میں ارتقائی عمل سے گزر کر انسان نے اپنے اندر اپنے اردگرد کے ماحول کی ایک انتہائی تیز حس پید اکی ہے۔ جب آپ گوگل میپس اور دیگر ایسی سروسز استعمال کرتے ہیں اور آس پاس موجود لوگوں سے بے گانہ ہو جاتے ہیں تو یہ حس متاثر ہوتی ہے اور اس کے نتیجے میں پورے عصبی نظام کو نقصان پہنچتا ہے۔گوگل میپس وغیرہ کے استعمال سے درحقیقت انسان اپنی دماغ کو اشیاءکے نام اور مختلف جگہوں کے ایڈریس وغیرہ یاد رکھنے سے دور کر رہا ہوتا ہے۔ اس عادت سے دماغ کا ’ہیپوکیمپس‘ نامی حصہ سب سے زیادہ متاثر ہوتا ہے، جو کہ یادداشت سے وابستہ حصہ ہے۔ جب انسان اس کا استعمال ترک یا کم کر دیتا ہے تو یہ سکڑ کر چھوٹا ہو جاتا ہے اور اس کے کمزورہوجانے سے انسان کو الزیمر اور اس جیسی دیگر عصبی بیماریاں لاحق ہوتی ہے۔“

مزید : ڈیلی بائیٹس /سائنس اور ٹیکنالوجی