عمران خان اور صوبائی حکومت نے ڈاکٹروں کے مسائل پر سنجیدگی سے توجہ نہیں دی : امیر مقام

عمران خان اور صوبائی حکومت نے ڈاکٹروں کے مسائل پر سنجیدگی سے توجہ نہیں دی : ...

پشاور( سٹاف رپورٹر)وزیراعظم کے مشیرو پاکستان مسلم لیگ(ن)خیبرپختونخواکے صوبائی صدر انجینئرامیرمقام نے کہاکہ عمران خان ایک طرف ناجائز مطالبے کیلئے126دن دھرنادیکرپورے ملک کومفلوج بنانے کوجمہوریت کانام دیتے ہیں جبکہ دوسری طرف ڈاکٹروں کی جائز مطالبات کوناجائزقراردیتے ہیں، پشاور میں ڈاکٹرزکسی دہشت گردی کے مرتکب نہیں ہوئے جن پربہیمانہ تشددکیاگیا اور حراست میں لیا گیا جس کی پرزورمذمت کرتے ہیں،محکمہ صحت میں اصلاحات کے راگ الاپنے والوں نے ڈنڈے کی صورت میں اصلاحات پیش کردیں، عمران خان اورانکی حکومت نے آج تک ڈاکٹروں کیساتھ بیٹھ کرانکے مسائل حل کرنے کی زحمت ہی نہیں کی،عوام کی تحفظ پرمامورپولیس کوتحریک انصاف اپنے مقاصدکے حصول کیلئے استعمال کررہی ہے۔ انہوں نے کہاکہ سالانہ ترقیاتی پروگرام 2017-18 میںBHUsاور سکولوں کیلئے 60کروڑ روپے تجویزکئے گئے جبکہ صرف ایک لاکھ روپے مختص کئے گئے ہیں جوتبدیلی کے نام نہاددعویداروں کیلئے باعث شرم ہے،عمران خان بنی گالہ سے ریموٹ کے ذریعے حکومت چلارہے ہیں اوراپنا حق مانگنے والوں کیخلاف تشددکے احکامات جاری کرتے ہیں۔انہوں نے عمران خان کومخاطب کرتے ہوئے کہاکہ نتھیاگلی کے پی ہاؤس سے احکامات کے ذریعے خیبرپختونخواکے عوام کی توہین اورتضحیک سے بازآجاؤورنہ عوام کہیں کا نہیں چھوڑیں گے،یہ خیبر پختونخواکے عوام کے مینڈیٹ کیساتھ مذاق کیاجارہاہے۔

ان خیالات کااظہارانہوں نے حیات آبادمیڈیکل کمپلیکس میںینگ ڈاکٹرز پرپولیس کی جانب سے تشددکے بعدان سے اظہاریکجہتی کے دوران ذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کیا۔وزیراعظم کے مشیرانجینئرامیرمقام نے کہاکہ عمران خان اگرمسائل حل کرنے کیلئے پشاورآناگوارانہیں کرتاتوان ڈاکٹروں کو نتھیاگلی طلب کریں اورانکے مسائل کے حل کیلئے اقدامات اٹھائیں اورزیرحراست تمام ڈاکٹروں کوفی الفوررہاکردیاجائے۔انہوں نے کہاکہ چور دروازے سے وزارت عظمیٰ حاصل کرنے والے ایک ادارہ سنبھال نہیں سکتے توملک کیاچلائیں گے،ظلم کی ایک حدہوتی ہے اورعمران خان باربارحدپارکرہے ہیں۔انہوں نے کہاکہ ڈاکٹروں کے مسائل ترجیحی بنیادوں پرفی الفورکمیٹی بنادی جائے اوراپنے کزن شکیل برکی کوجو بیرونی ملک بیٹھ کرادارہ چلارہے ہیں کوہٹاکرمیرٹ پراہلیت کے حامل فردکوتعینات کیاجائے تاکہ ڈاکٹروں سمیت عام عوام بھی سکھ کاسانس لے سکیں،خان صاحب کوپورے صوبے کوئی دوسراڈاکٹرنظرنہیںآیاجوشکیل برکی کوامریکہ مسلط کرایا۔انجینئرامیرمقام نے کہاکہ پرویزخٹک کوخانہ پُری رکھاگیاہے صوبے کے معاملات میں انکواختیارحاصل نہیں ہے،خیبرپختونخوا کے فیصلے بنی گالہ میں بیٹھ کرجہانگیرترین کررہے ہیں۔انہوں نے کہاکہ عملی اقدامات چاہئے صرف سوشل میڈیاپرسبزباغ دکھانے سے عوام کے مسائل حل نہیں ہوتے۔

مزید : علاقائی


loading...