بھارت نے براہموس سپرسانک کروز میزائلوں کی بڑی تعداد پاکستان اور چین کی سرحد پر نصب کردی: امریکی جریدہ

بھارت نے براہموس سپرسانک کروز میزائلوں کی بڑی تعداد پاکستان اور چین کی سرحد ...
بھارت نے براہموس سپرسانک کروز میزائلوں کی بڑی تعداد پاکستان اور چین کی سرحد پر نصب کردی: امریکی جریدہ

  


نیویارک (اے این این) بھارت اپنے لڑاکا طیاروں کو تیز ترین میزائلوں سے لیس کرے گا ، رواں برس اس کا تجربہ کیا جائے گا، براہموس سپر سانک کروز میزائلوں سے لیس کرنے کے لئے بھارت نے اپنے روسی ساختہ لڑاکا طیاروں سیخوئی کو اپ گریڈ کیا ہے ، بھارت نے براہموس سپر سانک کروز میزائلوں کی بھاری تعداد پاکستان اور چین کی سرحد پر نصب کردی ہے۔

امریکی جریدے”دی نیشنل انٹرسٹ “ کے مطابق بھارتی لڑاکا طیارے کروز میزائل فائر کریں گے یہ میزائل امریکی میزائل ہارپون سے ساڑھے تین گنا تیز ہیں۔ جریدے نے بھارتی میڈیا کے حوالے سے لکھا ہے کہ بھارت نے حال ہی میں اپنے لڑاکا طیارے سیخوئی Su-30 MKI میں کچھ نئی تبدیلیاں کی ہیں جو اسے بھارت اور روسی ساختہ براہموس میزائل لے جانے کے قابل بناتی ہیں۔ رواں برس کے اوائل میں بھارت کی سٹریٹجک فورسز کمان نے براہموس سپرسانک کروز میزائل لے جانے کی صلاحیت کے حامل نظر ثانی شدہ42 طیارے سیخوئی لینے کا آغاز کردیا ہے۔ بھارتی حکومت نے پاکستان کے ساتھ اپنی سرحد کے علاوہ، چین کے ساتھ شمال مشرقی سرحد پر اروناچل پردیش کی پہاڑی ریاست میں کافی تعداد میں براہموس میزائل رکھے ہوئے ہیں۔ براہموس ائر اسپیس کے سی ای او سدھیر کے مشرا کے مطابق ڈمی ٹیسٹ اور اصل فلائٹ مکمل کرنے میں چار سے پانچ ماہ لگ جائیں گے۔

روسی ساختہ سیخوئی لڑاکا طیارے بھارتی فضائیہ کے لئے 2020 تک ریڑھ کی ہڈی تصور کئے جاتے ہیں۔ بھارت پہلے ہی ایسے دو سو لڑاکا طیارے لے چکا ہے آئندہ 282 مزید لے گا۔ براہموس جو آبدوز، بحری جہاز، ہوائی جہاز یا زمین سے فائر کیا جاسکتا ہے۔ یہ دنیا کے سب سے تیز رفتار میزائلوں میں سے ایک ہے، مئی 2015 میں بھارتی فوج نے براہموس میزائلوں کا پہاڑوں کے پیچھے ہدف کو نشانہ بنانے کا تجربہ کیا تھا۔فرانس نے براہموس میزائل کو جدید ٹیکنالوجی سے لیس کرنے پر اتفاق کر لیا ہے۔

مزید : بین الاقوامی