شادی سے چند روز پہلے انکار کرنے والے دولہا سے دلہن نے تاریخ کا خوفناک ترین انتقام لے لیا

شادی سے چند روز پہلے انکار کرنے والے دولہا سے دلہن نے تاریخ کا خوفناک ترین ...
شادی سے چند روز پہلے انکار کرنے والے دولہا سے دلہن نے تاریخ کا خوفناک ترین انتقام لے لیا

  

برمنگھم(نیوز ڈیسک)شادی سے عین قبل دولہا انکاری ہو جائے تو یقیناً یہ بات کسی بھی دلہن کے لئے بہت بڑا صدمہ ہے۔ اب بھلا ایسے صدمے کی کیفیت میں دلہن کیا کرے گی؟ شاید رو رو کر خود کو ہلکان کر لے گی، یا سکتے کے عالم میں بت بن کر بیٹھ رہے گی، مگر اس برطانوی دلہن نے تو کچھ اور ہی کر ڈالا۔ موقع دیکھ کر دولہے کے گھر گئی اور پٹرول چھڑک کر آگ لگا دی، سب کچھ جل کر بھسم کر ڈالا۔ 

اخبار ’دی مرر‘ کے مطابق 54 سالہ کیتھرین جاروس اور 55سالہ کولن جاروس کی منگنی تقریباً ایک سال قبل ہوئی تھی اور عنقریب ان کے شادی ہونے والی تھی۔ بدقسمتی سے اُن کے درمیان کسی بات پر جھگڑا ہوا جس کے دوران کیتھرین نے گرما گرم آلوؤں کا سالن کولن کے منہ پر دے مارا۔ گرم آلو منہ پر لگنے سے کولن ایسا دلبرداشتہ ہوا کہ شادی منسوخ کرنے کا اعلان کر دیا۔ کیتھرین نے اس بات کو دل پر لے لیا۔ وہ موقع ملتے ہی کولن کے گھر گئی، ایک سیڑھی استعمال کرتے ہوئے خالی گھر میں داخل ہوئی اور فرنیچر پر پیٹرول چھڑک کر اسے آگ لگا دی۔ 

کولن نے بتایا کہ وہ دو سال سے ایک دوسرے کو جانتے ہیں اور ان کی منگنی کو ایک سال ہوچکا تھا۔ اس کا کہنا تھا کہ ’’30 سال سے میں اس گھر میں رہ رہا تھا اور یہی میری تمام کمائی اور اثاثہ تھا۔ جب مجھے آگ کی اطلاع ملی تو میں بھاگم بھاگ واپس پہنچااور میں نے دیکھا کہ میرا گھر شعلوں میں گھرا ہوا تھا اور کیتھرین سامنے سڑک پر کھڑی مسکراتے ہوئے بھڑکتے شعلوں کو دیکھ رہی تھی۔ میں نے شادی بھی بلا وجہ منسوخ نہیں کی تھی۔ اس نے مجھ پر گرم گرم آلو پھینک دیے تھے جس پر میں سخت مایوس ہو کر میں اس فیصلے پر پہنچا کہ اس کے ساتھ زندگی نہیں گزار سکتا۔ وہ اس بات پر مشتعل تھی لیکن میں سوچ بھی نہیں سکتا تھا کہ وہ میرا گھر ہی جلا ڈالے گی۔‘‘

مزید : ڈیلی بائیٹس