سیاست کو کاروبار بنا لیا گیا ، نواز ، زرداری ملکر سٹیل ملز کی نجکاری کر نا چاہتے ہیں ، عمران خان

سیاست کو کاروبار بنا لیا گیا ، نواز ، زرداری ملکر سٹیل ملز کی نجکاری کر نا ...

 میانوالی(اے این این) تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان نے الزام عائد کیا ہے کہ نواز شریف اور آصف زرداری ملی بھگت سے اسٹیل ملز کی نجکاری کرنا چاہتے ہیں،پاکستان سٹیل ملز 200ارب کے خسارے میں ہے تو شریف خاندان کی سعودی عرب میں مل کامیابی سے کیوں چل رہی ہے؟،حکمران میٹرو منصوبوں میں کمیشن کما رہے ہیں یہ رقم کسانوں کو دی جاتی تو ملک میں غربت کم ہو تی،کسان پیکج کے ذریعے صرف ایک طبقے کو نوازا گیا ہے،حکومت نے ڈیزل پر جی ایس ٹی بھی بڑھا دیا،سیاست کو کاروبار بنا لیا ہے آج جس کو دیکھو منہ اٹھائے سیاست میں آ جاتا ہے،قبضہ مافیا بھی سیاست کر رہا ہے ۔ان خیالات کا اظہار انھوں نے میانوالی کے مختلف علاقوں میں بلدیاتی انتخات کی مہم کے سلسلے میں نکالی گئی تحریک انصاف کی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔عمران خان نے کہا کہ70فیصد پاکستان کا دارومدار کاشتکاری پر ہے لیکن اس کے باوجود کسان غربت کی زندگی گزارنے پر مجبور ہے، حکومت کسانوں کا استحصال کر رہی ہے اور ان کے حقوق پامال کئے جا رہے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ حکومت نے 2 میٹرو منصوبوں پر 150 ارب روپے خرچ کئے جب کہ ملک بھر کے کسانوں پر 40 ارب روپے سے بھی کم رقم خرچ کی، اگر میٹرو منصوبوں پر خرچ کی جانے والی رقم کسانوں پر لگا دی جاتی تو ملک سے غربت کم ہوتی لیکن ان کا کام ہی بڑے بڑے میٹرو منصوبوں کے ذریعے کمیشن بنانا اور اپنا پیسہ لندن اور دبئی بھجوانا ہے۔عمران خان نے کہا کہ جب موجودہ حکومت آئی تو ڈیزل پر جی ایس ٹی 16 فیصد تھی لیکن آج ڈیزل پر جی ایس ٹی 50 فیصد ہو چکی ہے، اگر ڈیزل پر جی ایس ٹی 16 فیصد کر دی جائے تو ڈیزل کی قیمت میں 18 روپے فی لیٹر کمی ہو جائے اور ملک سے غربت کا خاتمہ ہو کیونکہ جب ڈیزل مہنگا ہوتا ہے تو سب چیزیں مہنگی ہو جاتی ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ جب آصف علی زرداری نے اقتدار سنبھالا تو اسٹیل مل 8 ارب روپے کے منافع پر تھی لیکن پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ(ن)کی ملی بھگت سے آج اسٹیل مل 200 ارب روپے کے خسارے میں چلی گئی ہے، میاں صاحب کی جدہ میں اپنی اسٹیل مل بہت زبر دست طریقے سے چل رہی ہے اور عوام کی اسٹیل مل بند ہو چکی ہے، مزدور بے روز گار ہو گیا ہے، یہ سب اسٹیل مل کو پرائیویٹائز کرنے کے لئے ہو رہا ہے۔ اسی طرح فیصل آباد میں پاور جنریشن کمپنی فیسکو جو نفع میں چل رہی ہے اسے بھی پرائیویٹائز کرنے کی سازشیں کی جارہی ہیں۔

مزید : صفحہ اول